ریلوے نے مختلف منصوبوں پر کام کرنے والے چینی انجینئرز کی سکیورٹی الرٹ کر دی

لاہور (میاں علی افضل سے) محکمہ ریلوے میں مختلف منصوبوں پر کام کرنیوالے چینی انجینئرز کی سکیورٹی ہائی الرٹ کر دی گئی ہے صوبائی حکومتوں کو بھی سکیورٹی بہتر بنانے کے حوالے سے خط لکھ دئیے گئے۔ اس کے ساتھ چینی افراد کو پرائیوٹ سکیورٹی رکھنے کی بھی اجازت دے دی گئی ہے۔ جدید ہتھیاروں سے لیس اضافی نفری کو سکیورٹی پر مامور کر دیا گیا ہے جبکہ سکیورٹی کو دفاتر کے اندر بھی چینی انجینئرز کے ساتھ رہنے کی ہدایت کر دی گئی ہے۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ یہ اقدامات چینی انجینئرز کو نشانہ بنانے کی مبینہ دھمکیوں کے بعد کئے گئے ہیں۔ انجینئرز کوکسی بھی خطرے سے محفوظ رکھنے کےلئے ریلوے کی تمام ڈویژنوں نے بھی فول پروف سکیورٹی انتظامات کا فیصلہ کیا ہے۔ ہوم دیپارٹمنٹ کی جانب سے چائنیز کو نشانہ بنانے کے خطرے کے خدشہ کی نشاندہی کی گئی جس پر جنرل منیجر آپریشن جنید قریشی کی جانب سے بھی سخت سکیورٹی کے احکامات جاری کئے گئے ہیں۔ محکمہ ریلوے میں چینی انجینئر مکنیکل، الیکٹرک، انفرسٹریکچر، سگنل و دیگر شعبوں میں کام کر رہے ہیں۔ ان میںشاہدرہ تا لالہ موسی سگنل منصوبہ کی تنظیم نو کا منصوبہ بھی شامل ہیں جبکہ بلوچستان میں گودار، نواب شاہ میں بھی چینی انجینئرز مختلف منصوبوں پر کام کر رہے ہیں۔ اسی سلسلہ میں ریلوے ہیڈ کوارٹر، ڈویژنوں اور ورکشاپ کا وزٹ ان کے معمول کا حصہ ہے۔ ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ چینی انجینئرز نے مبینہ خطرات سے آگاہی کے باوجود پاکستان میں کام جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔