پنجاب حکومت کے 100 دنوں میں مسائل خطرناک حد تک بڑھ گئے: اپوزیشن کا حقائق نامہ

لاہور (سپیشل رپورٹر + ) اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی میاں محمودالرشید نے پنجاب حکو مت کے سو دنوں پر ”100 ناکامیوں“ کے نام سے حقائق نامہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہباز شریف صوبے کے امور میں دلچسپی لینے کی بجائے وزیراعظم بننے کی ”ریہرسل“ میں مصروف ہیں۔ پنجاب حکومت کا (ن) لیگی ارکان پنجاب اسمبلی فی کس 80 لاکھ کے فنڈز بلدیاتی انتخابات کیلئے دھاندلی ہیں‘ وہ بدھ کے روز پنجاب اسمبلی میں سعدیہ سہیل اور دیگر کے ہمراہ پریس کا نفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ میاں محمودالرشید نے کہا کہ پنجاب حکومت گذشتہ 5 سالوں اور حالیہ حکومت کے 100 دنوں میں جتنی ناکامیاں ہوئیں ہیں اس سے صوبے میں جرائم سمیت دیگر مسائل میں خطرناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔ آٹے کی قیمتوں میں 100 دنوں میں 26 فیصد چاول قیمت میں 23 فیصد‘ آلو 50 فیصد‘ پیاز 52 فیصد‘ ٹماٹر 100 فیصد‘ دال ماش 28 فیصد‘ مرچ 43 فیصد‘ انڈے 39 فیصد مہنگے ہوئے ہیں اور پنجاب حکو مت مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی۔ پنجاب میں حکومت کے حالیہ 100 دنوں میں جرائم میں 62 فیصد اضافہ ہو چکا ہے۔ پولیس پر سالانہ اربوں روپے خرچ ہو رہے ہیں مگر 5 سالہ بچی کے ساتھ ہونیوالی زیادتی میں پو لیس ملزموں کو تاحال پکڑنے میں کا میاب نہیں ہو سکی۔ پنجاب میں اڑھائی سالوں کے دوران 460 زیادتی کے واقعات ہوئے ہیں اور پنجاب اس حوالے سے کیسز میں سرفہرست ہے۔ پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے بھی حکو مت نے وعدہ پورا نہیں کیا۔ بجلی کے بحران کے خاتمے کے حوالے سے پنجاب حکو مت کی کا رکردگی ”کھودا پہاڑ‘ نکلا چوہا“ کے مترادف ہے۔ پنجاب میں اب بھی روزانہ کئی کئی گھنٹوں کے لوڈشیڈنگ ہو تی ہے شہباز شریف اب مینار پاکستان پر احتجاجی کیمپ کیوں نہیں لگاتے؟ کسانوں کو پنجاب کے حصہ کا پانی دلانے میں بھی حکمران ناکام ہیں۔ حکومت پنجاب صوبے میں وی آئی پی کلچر کو ختم کرنے کی بجائے اس میں اضافہ کر رہی ہے۔ وی آئی پی کلحر ختم کرنے کا دعویٰ کرنے والے شہباز شریف کے بیٹے حمزہ شہباز شریف سرکاری ہیلی کاپٹر کا استعمال کر رہے ہیں۔