لاہور ہائیکورٹ: ووٹوں کی دوبارہ چیکنگ کے الیکشن کمیشن کے حکم کیخلاف سپیکر قومی اسمبلی کی درخواست پر عمران کو نوٹس دوبارہ جاری

لاہور ہائیکورٹ: ووٹوں کی دوبارہ چیکنگ کے الیکشن کمیشن کے حکم کیخلاف سپیکر قومی اسمبلی  کی درخواست پر عمران کو نوٹس دوبارہ جاری

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس عمر عطا بندیال نے حلقہ این اے 122 میں ووٹوں کے ریکارڈ کی دوبارہ چیکنگ کرنے کے الیکشن کمیشن کے حکم کے خلاف سپیکر قومی اسمبلی کی درخواست پر عمران خان کو دوبارہ نوٹس جاری کردیئے۔ سردار ایاز صادق کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ الیکشن کمیشن نے این اے 122 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست پر ریٹرننگ افسر کو احکامات جاری کئے کہ عمران خان کو ووٹوں کے ریکارڈ کی دوبارہ چیکنگ کرائی جائے جو غیر قانونی ہے کیونکہ الیکشن کے بعد ریٹرننگ افسر کا کردار ختم ہو جاتا ہے اور الیکشن کمیشن اب ریٹرننگ افسر کو کسی قسم کے احکامات جاری نہیں کرسکتا لہٰذا ووٹوں کے ریکارڈ کی دوبارہ چیکنگ کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔ عدالتی نوٹسز کے باوجود تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی جانب سے جواب داخل نہیں کروایا گیا جس پر عدالت نے دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے 25 ستمبر تک جواب طلب کرلیا۔