فوج پر حملہ کرنیوالے دشمن کا ایجنڈا پورا کر رہے ہیں: منور حسن

فوج پر حملہ کرنیوالے دشمن کا ایجنڈا پورا کر رہے ہیں: منور حسن

لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ دیر میں فوجی قافلے پر حملہ کرنے والے اگر واقعی طالبان تھے تو انہوں نے کسی طرح بھی اسلام اور ملک و قوم کی کوئی خدمت نہیںکی، فوج پر حملے کرنے والے دشمن کے ایجنڈے کو پورا کررہے ہیں، قوم کسی صورت بھی اپنے فوجی جوانوں پر حملوں کو برداشت نہیں کرسکتی، ہم نے ہمیشہ فوجی آپریشنوں کی مخالفت کی ہے لیکن جب فوج کو نشانہ بنایا جائے گا تو اس پرہم خاموش نہیں رہ سکتے، طالبان کو فوری طور پر اپنی پوزیشن واضح کرنی چاہئے۔ ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مختلف وفود سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ سید منور حسن نے کہا کہ امریکہ خطے کو چھوڑنے سے پہلے بھارت کو علاقے میں اہم کردارسونپنا چاہتا ہے، امریکہ پاکستان پر دباﺅ ڈال رہا ہے کہ وہ بھارتی بالادستی قبول کرکے چین کے ساتھ تعلقات پر نظر ثانی کرے۔ طالبان سے مذاکرات کی کامیابی خطے میں امریکی سازشوں کی ناکامی اور اس کے مفادات پر کاری ضرب ہے۔ آل پارٹیز کانفرنس کی طرف سے طالبان سے مذاکرات کے حوالے سے مکمل حمایت حاصل ہونے کے باوجود حکومت خاموش ہے اور جن کو خاموش رہنا چاہئے وہ روزانہ بیان بازی کررہے ہیں، کانفرنس کے فیصلوں کو خوش آئند قرار دینے اور تسلیم کر لینے کے بعد طالبان کی طرف سے فوجی افسروں کو نشانہ بنانا اور فوراً اس حملے کی ذمہ داری تسلیم کرلینا بہت سے سوالوں کو جنم دیتا ہے۔ امریکہ اور بھارت نہیں چاہتے کہ پاکستان میں امن قائم ہو۔