پنجاب یونیورسٹی میں پختون طلبا اور جمعیت کے درمیان کشیدگی برقرار

لاہور (اپنے نمائندے سے) جامعہ پنجاب میں گذشتہ روز بھی پختون طلبہ اور اسلامی جمعیت کے درمیان تصادم رہا اور پختون طلبہ نے پنجاب یونیورسٹی نے ہاسٹل میں جانے سے انکار کر دیا اور وہ اسلامی جمعیت طلبہ کی طرف سے پختون طالب علم زکریا پر تشدد کے خلاف سراپا احتجاج بنے رہے جبکہ دوسری طرف پنجاب یونیورسٹی کی انتظامیہ نے اسلامی جمعیت طلبہ کی طرف سے اسٹیٹ آفیسر زبیر بٹ کو شدید زخمی کرنے پر مقامی تھانہ میں مقدمہ کے اندراج کے لئے درخواست دے دی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ایک روز قبل پشتون طلبہ نے مل کر نئے آنے والے بلوچی دوستوں کے لئے چائے کا اہتمام کیا تھا جس پر جمعیت کے طلبہ نے حملہ کر دیا اور روائتی تشدد کیا۔ اس دوران جمعیت کے کارکنوں نے یونیورسٹی کے اسٹیٹ آفیسر پر بھی تشدد کیا اور اس کی گاڑی تباہ کر دی۔ اس حوالے سے جمعیت کا موقف ہے کہ پختون طلبہ کی بلوچ طلبہ سے لڑائی ہوئی اور یونیورسٹی انتظامیہ اس کا الزام جمعیت پر لگا رہی ہے۔