لاہورپولیس ابھی تک یہ پتہ لگانے میں کامیاب نہیں ہوسکی

 لاہورپولیس ابھی تک یہ پتہ لگانے میں کامیاب نہیں ہوسکی

لاہورپو لیس لائن دھماکے میں  پولیس اہلکاروں سمیت پانچ افراد شہید ہوئے ۔پولیس اپنی غفلت چھپانے کے لیے دھماکہ کے بعد بھی یہ کہتی رہی کہ دہشت گرد  پولیس لائنزکے اندر داخل ہوکر بڑی کارروائی کرنا چاہتا تھا مگر گیٹ پر سیکورٹی سخت دیکھ کر اس نے اپنے آپ کو اڑا لیا لیکن  پولیس یہ  بتانے سے قاصر ہے دہشت گرد پولیس لائنز تک کیسے پہنچا اور لاہور میں اس کے سہولت کار کون تھے یا ہیں پولیس ذرائع کے مطابق جب دھماکہ ہوا اس وقت ڈی آئی جی آپریشنز میٹنگ میں مصروف تھے  دوسری طرف سرکاری فوٹیج کے مطابق ڈی آئی جی آپریشنز  پہلی ایمبولینس آنے کےآدھے گھنٹے بعد    گیٹ پر آئے ۔حساس اداوں نے پولیس کو پہلے سے ہی اطلاع دے دی تھی کہ دہشت گرد لاہور کی اہم عمارات کو نشانہ بنا سکتے ہیں مگر اس پر توجہ نہ دی گئی اور  پولیس لائنز کے باہر دھماکہ ہوگیا