دیربالا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے، خفیہ سازشوں پر سب کو نظر رکھنا ہو گی: فضل الرحمن

دیربالا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے، خفیہ سازشوں پر سب کو نظر رکھنا ہو گی: فضل الرحمن

لاہور (خصوصی نامہ نگار) جمعیت علماءاسلام کے مر کزی امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ جمعیت ملک سے ظلم کا نظام ختم کرکے اسلام کا نفاذ اور اس کے قیام کے لئے کوشاں ہے، اسلام کے نفاذ سے ہی ملک بحرانوں سے آزاد ہو گا، ملک میں امن کے قیام کے لئے کوششوں کو آگے بڑھانا وقت کی اہم ضرورت ہے، دیر بالا واقعہ انتہائی افسو ناک ہے، خفیہ سازشوں پر سب کو نظر رکھنی ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز وفود اور پارٹی راہنماﺅںمولانا عبد الغفور حیدری، مولانا محمد امجد خان، مولانا محمد یوسف، مولانا مفتی ابرار احمد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ فضل الرحمن نے کہا کہ ملک کی معیشت ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کی غلام ہے، قوم کا بچہ بچہ مقروض ہے، مہنگائی، بے روز گاری، بدامنی نے ملکی معیشت کا جنازہ نکال دیا ہے، رہی سہی کسر بیرونی قرضوں نے نکال دی ہے، حکمران بیرونی امداد کی طرف دیکھنے کے بجائے اللہ کی طرف رجوع کریں، جمعیت اگر سابقہ اسمبلی میں نہ ہوتی تو آج ملک کا آئین سیکولر ہوتا، انہوں نے کہا کہ جے یو آئی ملک میں اسلامی نظام کے نفاذکی جنگ لڑ رہی ہے، بین الاقوامی ایجنڈے کے تحت مدارس کے کردار کو ختم کرنے کی ناکام کوششیں کی جا رہی ہیں لیکن مدارس قائم رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سرزمین پر جنگ طالبان اور مولویوں نے مسلط نہیں کی یہ جنگ امریکہ کو آقا سمجھنے والے حکمران خود لائے ہیں، دین مدارس کو کوائف کے نام پر حکومت تنگ کر نا بند کرے، تحریک انصاف کے ساتھ ہماری جنگ ذاتی نہیں نظریاتی ہے۔ آئی این پی کے مطابق ڈیرہ اسماعیل خان میں اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے فضل الرحمن نے کہاکہ پاکستان دشمن قوتیں ملک کو امن کا گہوارہ بنتا نہیں دیکھنا چاہتیں، ملک دشمن عناصر کی یہ کوشش ہے کہ پاکستان میں امن کی کو ششوں کو سبوتاژ کرکے فوج کو فاٹا میں الجھائے رکھا جائے، بعض ملکی اوربین الاقوامی عناصر ہماری قومی پالیسی پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر رہے ہیں۔