قومی املاک، اہم دینی وسیاسی رہنمائوں کا نیا سکیورٹی پلان تشکیل

لاہور (سپیشل رپورٹر) محکمہ داخلہ پنجاب اور پولیس حکام نے باہمی مشاورت سے، قومی املاک اور اہم دینی و سیا سی رہنمائوں کا نیا سکیورٹی پلان تشکیل دے دیا۔ اہم شخصیات کو اپنی نقل و حمل کو کچھ عرصہ کے لئے محدود کرنے کی سفارش کرنے کے علاوہ ، اہم املاک پر مسلح افراد کی تعیناتیاں کر دی گیئں جبکہ حساس قرار پانے والی املاک /مقامات پر متعلقہ تھانہ کے ذمہ داران کو رائونڈ دی کلاک گشت کرتے رہنے کے احکامات بھی جاری کر دیئے گئے ہیں۔ سکیورٹی خدشات کو مدنظر رکھتے ہوئے سول سیکرٹریٹ، پی اینڈ ڈی، اولڈ پی اینڈ دی، آئی جی آفس، سپیشل برانچ آفس، پیپلز ہائوس، جی او آر ون، جی او آر ٹو مزنگ چونگی، جی او آر تھری شادمان، واپڈا ہائوس، پنجاب اسمبلی،لاہور ہائی کورٹ، سپریم کورٹ رجسٹری، ایوان اوقاف، دربار حضرت داتا گنج بخش ؒ، دربار حضرت بی بی پاکدامناں ؒ، دربار حضرت پیر مکی ؒ، دربار حضرت شاہ جمال ؒ، دربار حضرت شاہ کمال ؒ، لاہور ایئر پورٹ، جاتی عمرہ، ماڈل ٹائون میں قائم وزیر اعلیٰ پنجاب اور ان کے عزیز و اقارب کی رہائشگاہوں، ارفع کریم ٹاور، سی سی پی او لاہور آفس کو حساس ترین قرار دے کر ان کو کیٹگیری اے میں شامل کیا گیا ہے۔