وزیراعظم ہائوس جاتی عمرہ کی سکیوٹی کیلئے 6 کروڑ‘ 10 لاکھ روپے کی منظوری

لاہور (معین اظہر سے) وزیراعظم کی ذاتی رہائشگاہ کی سکیورٹی کو فول پروف بنانے کیلئے پنجاب پولیس نے 6 کروڑ 10 لاکھ روپے کے فنڈز طلب کر لئے۔ خزانہ نے منظوری کے بعد  فائل وزیر اعلی پنجاب کو  بھجوا دی ہے جس میں پولیس نے کہا  وہ وزیر اعظم ہاؤس جاتی عمرہ کیلئے  سیکورٹی کیمرے اور سکینگ مشین خریدی جائیں گی جبکہ ذرائع کے مطابق وزیر اعلی پنجاب نے بطور سپلمنٹری فنڈز کے طور پر منظور کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق  وزیراعظم ہاؤس جاتی عمرہ کیس میں لکھا گیا ہے  کہ  سکیورٹی کو فول پروف بنانے کیلئے مزید 6 کروڑ 10 لاکھ کے فنڈز مانگے  گئے۔ اس بارے میں ائی جی پنجاب نے جو کیس بجھوایا اس میں انہوں نے کہا  کہ ملک میں دہشت گردی کی جو موجودہ لہر ہے اس کی وجہ سے پبلک مقامات ، پولیس ، آرمی انفراسٹرکچر ، حکومتی بلڈنگ، مذہبی ادارے ، سیاسی اور مذہبی رہنما اور غیر ملکی سفارتخانے دہشت گردوں کا پرائم ٹارگٹ ہیں۔ اسلئے وقت کا تقاضا ہے کہ دہشت گردوں، انتہاء پسندوں کی سخت قسم کی  نگرانی کی جائے۔  اس ضمن میں وزیر اعظم ہاوس جاتی عمرہ کی سیکورٹی کا باریک بینی سے جائزہ لیا گیا ہے اس بارے میں سینٹرل پولیس آفس میں متعدد اہم اجلاس ہوئے سپیشل برانچ اور سیکورٹی ڈویژن آف لاہور ڈسٹرک سے رائے لی گئی ہے۔ جس میں فیصلہ کیا گیا کہ وزیر اعظم ہاوس لاہور کی سیکورٹی میں اضافہ کیا جائے۔ دو فیصلے کئے گئے  کہ فزیکل انفراسٹریکچر میں اضافہ اور پولیس اور ایلیٹ فورس کے جوانوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے اس کے علاوہ  عمارت اردگرد کے ماحول پر نظر رکھنے کے لئے سکیورٹی کیمرے لگائے جائیں۔ سکینگ مشین لگائی جائے  جس کیلئے سکیورٹی آلات خریدے جائیں۔ اور ان کے خریدنے اور ان کو لگانے کیلئے تقریبا 6 کروڑ 10 لاکھ روپے دئیے جائیں جس پر محکمہ خزانہ پنجاب نے وزیر اعظم ہاوس کی سیکورٹی کے لئے فنڈز پر کوئی اعتراضات لگائے بغیر ان کو ایمرجنسی آلات خریدنے کے لئے فائل وزیراعلی پنجاب کو بجھواء دی ہے۔ جس کے لئے آج فنڈز جاری کرنے کا لیٹر پنجاب پولیس کو فنانس ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کر دیا جائے گا۔