بورڈ آف گورنرز کے اجلاس میں نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے بجٹ کی منظوری دی گئی

لاہور (خصوصی رپورٹر) نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے بورڈ آف گورنر نے مالی سال 2014-15ء کا بجٹ گزشتہ روز منظور کر لیا۔ نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی کل آمدن کا تخمینہ 5کروڑ 38لاکھ 96ہزار 95روپے جبکہ مجوزہ مجموعی اخراجات کا تخمینہ 5کروڑ 7لاکھ سترہ ہزار 141روپے ہے۔ مالی سال 2014-15ء کا بجٹ نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے چیف کوآرڈی نیٹر میاں فاروق الطاف نے نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے بورڈ آف گورنرز کے چودھویں اجلاس میں پیش کیا۔ بجٹ پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ 30جون 2014ء کو ٹرسٹ کے مالی اثاثہ جات 37کروڑ 98لاکھ 16ہزار دو سو چھپن روپے (Rs-379,816,256) ہوں گے جس سے اس امر کا اظہار ہوتا ہے کہ 2013-14ء میں ان میں ایک کروڑ 30لاکھ 56ہزار 6سو 96روپے (Rs-13,826,696)کا اضافہ ہوا۔ انہوں نے کہا کہ نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی آمدن کا بڑا حصہ قومی بینکوں میں طویل المیعاد سرمایہ کاری سے حاصل شدہ منافع پر مشتمل ہے۔ دن بہ دن بڑھتی ہوئی مہنگائی کے پیش نظر ٹرسٹ کی حکمت عملی یہ ہے کہ نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی ترویج و اشاعت کے لئے درکار بنیادی اخراجات پر کوئی روک لگائے بغیر اپنے مشن کو بطریق احسن سرانجام دیا جائے۔ کفایت شعاری اور دانشمندی کی راہ اختیار کرتے ہوئے ہم نے اپنے اخراجات کو دستیاب آمدن سے معقول حد تک کم رکھا ہوا ہے اور اخراجات سے زائد آمدن کو ٹرسٹ کے بنیادی ڈھانچے میں توسیع کی مد میں استعمال کیا جاتا ہے۔