مسئلہ کشمیر کے حل تک خطے میں پائیدار امن ممکن ہے نہ بھارت سے موثر تجارت : برجیس طاہر

مسئلہ کشمیر کے حل تک خطے میں پائیدار امن ممکن ہے نہ بھارت سے موثر تجارت : برجیس طاہر

لاہور (فرخ سعید خواجہ) وفاقی وزیر امور کشمیر، گلگت وبلتستان چودھری برجیس طاہر نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر حل ہونے تک اس خطے میں نہ پائیدار امن قائم ہو سکتا ہے نہ ہی پاکستان بھارت کے درمیان تجارت موثر ہو سکتی ہے۔ توانائی کا بحران حل کرنے کے لئے حکومت کوشاں ہے اور 30 دن میں 503 ارب روپے کے گردشی قرضے کا مسئلہ حل کرنا حکومت یک سمت کی نشاندہی کرتا ہے۔ مسلم لیگ (ن) تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لے کر دہشت گردی کا خاتمہ کرے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز نوائے وقت کو دئیے گئے انٹرویو میں کیا۔ برجیس طاہر نے کہا کہ آزاد کشمیر، گلگت وبلتستان کے عوام کے مسائل حل کرنے میں وفاقی حکومت آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کی حکومتوں سے مکمل تعاون جاری رکھے گی۔ اس سوال پر کہ موجودہ حکومت بھارت سے تعلقات بڑھانے کی راہ پر گامزن ہے جبکہ مسئلہ کشمیر جوں کا توں موجود ہے۔ وفاقی وزیر برجیس طاہر نے کہا کہ پاکستان اپنے تمام ہمسایہ ملکوں سے اچھے تعلقات کا خواہاں ہے جہاں تک بھارت کا تعلق ہے ہم اس سے بھی اچھے مراسم رکھنے کے حق میں ہیں تاہم مسئلہ کشمیر جب تک حل نہیں ہو گا دونوں ملکوں میں پائیدار تعلقات قائم نہیں ہو سکتے۔ انہوں نے کہا کہ قائداعظمؒ نے فرمایا تھا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے بھلا کون پاکستانی بانی پاکستان قائداعظمؒ کے اس فرمان کی نفی کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر قومی امنگوں کے مطابق حل کیا جائے گا۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی حکومت دہشت گردی کے خاتمے میں پارلیمنٹ میں موجود تمام جماعتوں کوساتھ لے کر چلے گی۔ اس کا اظہار وزیراعظم خود کر چکے ہیں۔