ایل ڈی نے لاہور کے مختلف علاقوں میں 73 رہائشی سکیموں کو غیرقانونی قرار دیدیا

ایل ڈی نے لاہور کے مختلف علاقوں میں 73 رہائشی سکیموں کو غیرقانونی قرار دیدیا

لاہور (خصوصی نامہ نگار) لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے شہریوں اور متوقع خریداروں کو خبر دارکیا ہے کہ ایل ڈی اے کنٹرولڈ ایریا میں شامل لاہور شہر کے مختلف علاقوں میں 73رہائشی سکیمیں غیر قانونی ہیں اور ان کے سپانسرز پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے ذریعے پر کشش اشتہارات دے کر پلاٹ فروخت کر رہے ہیں اسلئے شہریوں کو ان کے اپنے مفاد میں مطلع کیا جاتا ہے کہ ان سکیموں میں پلاٹ مت خریدیںاور کسی سکیم میں پلاٹ کا سوداکرنے سے پہلے اس سکیم کی منظوری کے بارے میں تصدیق کر لیںان سکیموںمیں40کنال سے کم رقبے کی سکیمیں عبدا للہ ٹاﺅن‘اختر آباد ہاﺅسنگ سکیم‘عزیز کالونی ‘بلال ٹاﺅن‘فیصل ٹاﺅن‘فتح ولاز‘فاطمہ ہاﺅسز‘ گیلانی ہومز‘حا جی اما نت علی اسٹیٹ ‘حا جی پارک‘ہجویر ی گار ڈنز‘حسنین پار ک‘جو ہر ولاز ہاﺅسنگ سکیم‘ ماہ نو ر ولاز‘ ملک پار ک‘میا ں جی عبدا للہ کالونی‘مصطفی ٹاﺅن‘ناصر کالونی‘نیو گلشن ِ لاہور‘ پا ک ٹاﺅن‘ رحمان پار ک ہا ﺅسنگ سکیم‘ولاز متصل آبپارہ ہاﺅسنگ سکیم‘وائٹل ہومز اور زین ہومز شامل ہیں - جن سکیموں کا رقبہ 40کنال سے زیادہ اور 100کنال سے کم ہے ان میں الحسن گار ڈن ‘علی ہو مز ‘المدینہ ٹاﺅن ہاﺅسنگ سکیم‘بلال ٹاﺅن‘ڈاکٹر زسوسائٹی‘ڈریم ولاز‘ فیصل ٹاﺅن فیز ٹو‘غوثیہ کالونی‘گرین ایونیو‘گر ین پار ک‘ گلشن امین‘ حا فظ ٹاﺅن‘ آئیڈ یل گا ر ڈن ہاﺅسنگ سکیم‘ اقبال پا رک‘ اسلا م پار ک ہاﺅسنگ سکیم ‘ جمیل پار ک ‘کوہ نو ر ہاﺅسنگ سکیم‘لالہ زار گار ڈن ‘میاں فار م ہاﺅسز‘منیر گار ڈن‘روشن ٹاﺅن‘سادات کالونی سب ڈویثر ن متصل سلطان ٹاﺅن‘سبحان گار ڈنز‘واک لینڈ ولاز اور یو سف ٹاﺅن شامل ہیں-