نجی کلینک کیلئے ڈاکٹرز کو 25 لاکھ تک بلا سود قرضے دینے کا فیصلہ

نجی کلینک کیلئے ڈاکٹرز کو 25 لاکھ تک بلا سود قرضے دینے کا فیصلہ

لاہور(نیوزرپورٹر)مشیر صحت پنجاب خواجہ سلمان رفیق نے کہا کہ شادی شدہ لیڈی ڈاکٹرز جو ملازمت کا پیشہ اختیار نہیں کرتیں وہ اپنے گھر کے قریب پرائیویٹ کلینک بنا کر خواتین اور بچوں کے صحت کے مسائل حل کرنے میں نمایاں کردار ادا کر سکتی ہیں۔ انہوں نے یہ بات پنجاب ہیلتھ فا¶نڈیشن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے 15 ویں اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی -اجلاس میں سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک ، ایم ڈی فا¶نڈیشن اظہار احمد شیخ ، ایڈیشنل سیکرٹری ( آئی اینڈ سی ) ایم نعیم غوث ، اسسٹنٹ چیف پلاننگ آفیسر ( ہیلتھ ) پی اینڈ ڈی ڈیپارٹمنٹ عظمیٰ حفیظ ، ایڈیشنل سیکرٹری پاپولیشن ویلفیئر میڈم زرین ، پروفیسر عیص محمد ( غیر سرکاری ممبر) محکمہ سوشل ویلفیئر اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔ اجلاس میں نجی کلینک قائم کرنے کے لئے ڈاکٹرز کو بلا سود قرضہ کی حد 15 لاکھ سے بڑھا کر 25 لاکھ روپے کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اجلاس میں تجویز پیش کی گئی کہ تربیت یافتہ نرسز کی کمی کو پورا کرنے کے لئے نجی میڈیکل کالجوں کو نرسنگ سکول کھولنے کے لئے ان کی حوصلہ افزائی کی جائے۔