لاپتہ افراد کے معاملہ پر عدالتی احکامات کو مذاق بنا لیا گیا: وسیم اختر

لاپتہ افراد کے معاملہ پر عدالتی احکامات کو مذاق بنا لیا گیا: وسیم اختر

لاہور (خصوصی رپورٹر) پنجاب اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر اور امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر نے سپریم کورٹ کی جانب سے بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کے دوران وزارت دفاع کو حکم کہ ’’لاپتہ افراد کی بازیابی اور بلوچستان کے مسئلے کے حل کے لئے تمام حساس اداروںکا مشترکہ اجلاس طلب کیا جائے۔ ملک میں جنگل کا قانون رائج ہے۔ وفاقی حکومت اپنی آئینی و قانونی ذمہ داری ادا کرتی تو لاپتہ افراد اب تک بازیاب ہو چکے ہوتے۔ پاکستان میں عدالتیں آزاد ہیں اگر کسی نے کوئی جرم کیا ہے تو اسے ثبوتوں کے ساتھ عدالتوں میں پیش کیا جائے۔ لوگوں کو شک کی بنیاد پر اٹھا لیا جانا انسانی بنیادی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی اور اسلامی شریعت کے منافی ہے۔ موجودہ حالات میں اللہ کے بعد سپریم کورٹ ہی لاپتہ افراد کے لواحقین  کا سہارا ہے۔ تمام لاپتہ افراد کو بازیاب کرایا جائے اور انہیں عدالتوں میں پیش کیا جائے۔