حکومتی پالیسیوں میں تسلسل کے بغیر امن و استحکام ممکن نہیں: پی پی رہنما

لاہور(خبر نگار)پیپلزپارٹی کے رہنما راجہ عامر،اورنگزیب برکی،افنان صادق بٹ،زاہد ذوالفقار خان،فضل بٹ، محمد اشرف بھٹی نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کی پالیسیوں میں تسلسل کے بغیرملک میں امن واستحکام نہیں آئے گا۔حکومت کی فارن پالیسی بھی تضادات اورتنازعات کاشکار ہے ۔وزیراعظم نوازشریف کی ناقص حکمت عملی کے نتیجہ میں پاکستان کے دوست ملک بھی دشمن بن گئے ہیں۔ خودحکومت بھی مذاکرات کی کامیابی کیلئے زیادہ پرامید نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ واشنگٹن کی ڈکٹیشن پروفاقی حکومت کی ڈائریکشن بدل جاتی ہے۔ دس ماہ میں وزیراعظم سیکرٹریٹ نے یوتھ بزنس لون سکیم کاڈھونگ رچانے کے سواکچھ نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ وزرات عظمیٰ کامنصب بھی غیراعلانیہ طورپرشہبازشریف کے پا س ہے۔وہ اپنازیادہ تروقت اسلام آبادمیں گزارتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف دہشت گردی کی آفت اوردوسری طرف مہنگائی کی مصیبت بیچارے عوام دونوں کے درمیان پس رہے ہیں۔پیپلزپارٹی کے دوراقتدارمیں مضبوط ہونیوالے قومی ادارے موجودہ حکومت کی نااہلی سے بری طرح ٹوٹ پھوٹ کاشکار ہوگئے۔