پنجاب میں 65 فیصد کرپشن کی آڈیٹر جنرل بھی تصدیق کر چکے: پرویز الٰہی

پنجاب میں 65 فیصد کرپشن کی آڈیٹر جنرل بھی تصدیق کر چکے: پرویز الٰہی

لاہور+ مریدکے (خصوصی رپورٹر+ نامہ نگار) پاکستان مسلم لیگ کے سینئر مرکزی رہنما و نائب وزیراعظم چودھری پرویز الٰہی نے چیئرمین نیب ایڈمرل (ر) سید فصیح بخاری کی جانب سے پنجاب حکومت اور محکموں میں 65 فیصد کرپشن کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان سے قبل آڈیٹر جنرل بھی پنجاب میں کرپشن کی تصدیق کر چکے ہیں۔ یہاں اپنی رہائش گاہ پر پارٹی رہنماﺅں اور عہدیداروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خادم اعلیٰ کی فلاپ سکیموں سمیت 5 سال میں جو بھی منصوبہ یا پروگرام بنایا گیا اس کا اولین مقصد لوٹ مار تھا اور کھربوں روپے کی کرپشن سامنے آ چکی ہے، سستی روٹی سکیم، فوڈ سپورٹ، گرین ٹریکٹر، کالی پیلی ٹیکسی، آشیانہ سمیت کون سی سکیم ہے جس میں کھربوں روپے کی لوٹ مار نہیں کی گئی۔ انہوں نے ہر پرچیز میں یہاں تک کہ سرکاری خریداری مراکز پر کسانوں سے گندم کی خریداری میں بھی کرپشن کے اپنے ہی پچھلے ریکارڈ توڑ دئیے۔ انہوں نے کہا کہ لوٹ مار کی متذکرہ سکیموں کے علاوہ ہمارے دور میں بنائی گئی نئی سڑکوں اور پلوں کے علاوہ اپنے ہی دور کی نوتعمیر سڑکیں اور جنگلے توڑ توڑ کر دوبارہ بنانے میں بھی اربوں روپے کی کرپشن کی گئی۔ چودھری پرویزالٰہی نے ”شیم شیم“ کے نعروں میں کہا کہ پنجاب کے قیمتی اثاثے بیچ کھانے والوں نے اپنی کرپشن اور لوٹ مار سے ہمارے دور کے سرپلس اور خوشحال پنجاب کو مقروض بنا دیا ہے۔ مریدکے سے نامہ نگار کے مطابق پرویز الٰہی نے آمنہ ذوالفقار ڈھلوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے عوام کو ریلیف دیا جبکہ موجودہ حکمران صرف تکلیف دے رہے ہیں۔ انشاءاللہ آئندہ انتخابات میں پنجاب کے شہزادے رائیونڈ تک محدود ہو جائیں گے۔ این اے 131 پر ہماری خصوصی نظر ہے۔ ہمارا پی پی سے مضبوط اتحاد ہے جو انشاءاللہ آئندہ انتخابات میں شریف برادران کو انکی اوقات یاد دلا دے گا۔ این اے 131 میں آمنہ ذوالفقار اور پی پی 163 میں رانا اعجاز حسین ہمارے نمائندے ہیں عوام ان کے ساتھ تعاون کریں۔