عام انتخابات میں بدترین دھاندلی ہوئی عوام کا مینڈیٹ چرایا گیا: شاہی سید

عام انتخابات میں بدترین دھاندلی ہوئی عوام کا مینڈیٹ چرایا گیا: شاہی سید

لاہور (کلچرل رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر اور سینیٹر شاہی سید نے کہا ہے کہ الیکشن 2013ءمیں تاریخ کی بدترین دھاندلی ہوئی، عوام کا مینڈیٹ چرایا گیا ہے۔ جو جیتا ہے وہ بھی کہہ رہا ہے کہ دھاندلی ہوئی ہے، ہم سمجھتے تھے کہ الیکشن فخرو بھائی نے کرائے ہیں مگر اصل میں الیکشن حکیم اللہ محسود نے کرائے ہیں کیونکہ انہوں نے انتخابات سے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ اے این پی، پیپلزپارٹی اور ایم کیوایم انتخابات سے دور رہیں۔ میں ان انتخابات کے بارے میں مختصراً یہ کہوں گا کہ مرغی ذبح کی گئی ہے کسی کو ٹانگ دیدی گئی، کسی پارٹی کو سر دیدیا گیا اور کسی پارٹی کو گردن دیدی گئی۔ الیکشن جیسے ہی ہوئے ہم نے ہار مان لی حالانکہ دھاندلی کے ثبوت موجود ہیں۔ ان انتخابات میں ٹھپہ مافیا نے کام دکھایا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نوائے وقت گروپ کو ایک انٹرویو میں کیا۔ بلوچستان کے مسائل کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ وہاں کے عوام کی محرومیاں دور کی جائیں جو وہاں پر سڑکوں کی تعمیر، تعلیم، روزگار اور انڈسٹری لگانے سے دور ہو گی۔ بلوچستان میں اراکین قومی اسمبلی کی سیٹیں بڑھائی جائیں تاکہ ہر رکن اسمبلی اپنے حلقے کو کنٹرول کر سکے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ دہشت گردی اور کرپشن ناسور ہیں جو ملک کو کھوکھلا کر رہے ہیں، دہشت گردی، کرپشن اور دیگر مسائل کو کوئی ایک پارٹی حل نہیں کر سکتی لہٰذا تمام سیاسی پارٹیوں کو اکٹھے ہوکر ملک کے مسائل حل کرنے چاہئیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ اداروں کی تضیحک نہیں ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ مرکزی اور سندھ حکومتوں کے پاس بھاری مینڈیٹ ہے لہٰذا کراچی میں آپریشن کرتے وقت کسی کے ساتھ رعایت نہ برتی جائے۔ چیف جسٹس والے چار نکات پر عمل کیا جائے تو کراچی کے حالات ٹھیک ہو سکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ رینجرز آپریشن ٹھیک کر رہی ہے مگر پولیس اس کے ساتھ تعاون نہیں کر رہی۔