پرنٹ شدہ سمن کی قلت، عدالتی اہلکار سادہ کاغذات پر مہریں لگانے لگے

لاہور (رپورٹ : جاوید یوسف) صوبے بھر کی ماتحت درجنوں سول اور فوجداری عدالتوں کے اہلکار ”پرنٹ شدہ“ سمن اور وارنٹوں کے فارم نہ ہونے کی وجہ سے سادے کاغذات پر مہریں لگا کر وقت گزار رہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ ان درجنوں ماتحت عدالتوں کے سٹینوگرافروں، ریڈرز اور اہلمدوں کے پاس ضرورت کے مطابق متعلقہ سٹیشنری بھی نہیں۔ یہ اشیاءاہلکار خود اپنی جیب سے خرید کر یا کسی سائل کے ذریعے حاصل کرکے کام کر رہے ہیں۔ دوسری جانب لاہور میں بعض ماتحت عدالتوں کے احاطہ میں سرکاری سطح پر بینر آویزاں کئے گئے ہیں کہ ”رشوت لینے والا رشوت دینے والا یا بخشیش وصول کرنا جرم ہے اور یہ قابل دست اندازی پولیس ہے“ ماتحت عدالتوں کے عملہ کی تنخواہیں نہایت قلیل ہیں۔ نان ٹیکنیکل عملہ کو ٹیکنیکل عملہ سے زیادہ تنخواہیں مل رہی ہیں۔ ایسی صورتحال سے ٹیکنیکل عملہ میں بددلی پھیلی ہوئی ہے۔