کلرکوں کی قلم چھوڑ ہڑتال، پنجاب اسمبلی تک ریلی، دھرنا

لاہور (سپیشل رپورٹر) ایپکاکی کال پر کلرکوں نے ملک بھر میں قلم چھوڑ ہڑتال کی جبکہ لاہور میں ناصر باغ سے پنجاب اسمبلی تک احتجاجی ریلی نکالی اور وزیراعلیٰ آفس کے باہر مال روڈ پر شام تک دھرنا دیا گیا۔ شدید گرمی کی وجہ سے درجنوں ملازمین بے ہوش ہو گئے، مظاہرین حکومت پنجاب کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے، مغرب کے وقت حکومت پنجاب کی طرف سے ایڈیشنل سیکرٹری سقراط امین کے ساتھ مذاکرات ہوئے اور ایپکا کے تمام مطالبات کی منظوری کے لئے سمری وزیر اعلیٰ پنجاب کو ارسال کر دی گئی اور یقین دہانی کروائی گئی اس سمری کی منظوری بھی جلد حاصل کر لی جائے گی۔ مذاکرات کے بعد میڈیا کے نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے صدر ایپکا پنجاب محمد سلطان مجددی نے ایڈیشنل سیکرٹری سقراط امین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اگر وزیر اعلیٰ پنجاب نے 10دن میں سمری کی فوری منظوری نہ دی تو ملک بھر کے تمام ملازمین کو مشترکہ احتجاج کی کال دی جائے گی اور سول سیکرٹریٹ کا گھیراﺅ کیا جائے گا اور ملک بھر کے تمام محکمہ جات میں کام بند کر دیں گے۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی چیئرمین محمد افضل نے کہا کہ خادم اعلیٰ کو عوام کا کوئی خیال ہے اور نہ ہی سرکاری ملازمین کا۔ دھرنے کے باعث مال روڈ قریباً7گھنٹے مکمل طور پر جام رہا اور مغرب کے وقت ایڈیشنل چیف سیکرٹری سید مبشر رضاءکی ہدایت پر ایڈیشنل سیکرٹری سقراط امین اور ڈپٹی سیکرٹری نے ایپکا رہنماﺅں سے مذاکرات کئے۔ یقین دہانی کے بعد احتجاج کو 10دن کے لئے مو¿خر کرتے ہوئے محمد سلطان مجددی نے کہا ہم وزیر اعلیٰ پنجاب کو صرف 10دن دیتے ہیں وگرنہ ملک بھر میں شدید احتجاج کیا جائے گا۔
کلرکوں کی ہڑتال