قائداعظم میڈیکل کالج میں نیا کڈنی ٹرانسپلانٹیشن ڈائلسز سینٹر قائم کرنے کا فیصلہ

لاہور (ندیم بسرا) حکومت پنجاب نے گردے کی بیماری پر قابو پانے اور اس کے علاج معالجے کے لیے قائداعظم میڈیکل کالج/بہاﺅالدین وکٹوریہ ہسپتال میں نیا کڈنی ٹرانسپلانٹیشن ڈائلسز سینٹر قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کے تحت محکمہ خزانہ نے مذکورہ نیا ہسپتال چلانے کے لیے 117 نئی آسامیوں کی منظوری بھی دے دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب کے محکمہ پنجاب کے زیرانتظام جنوبی پنجاب (بہاول پور) کے شہریوں کے لیے ایک مکمل کڈنی ٹرانسپلانٹیشن ڈائلسز سینٹر قائم کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔ اس سینٹر کو چلانے کے لیے گریڈ اٹھارہ کے7 ڈاکٹرز جس میں اسسٹنٹ پروفیسر گردہ مثانہ، ریڈیالوجی، نیفرالوجی، بے ہوشی کے ڈاکٹرز اس میں سینئر رجسٹرار یورالوجی، نیفرالوجی، بے ہوشی کے دو سینئر رجسٹرار شامل ہیں جب کہ 8 آسامیاں گریڈ سترہ کے میڈیکل آفیسرز بھی بھرتی کیے جائیں گے اس کے ساتھ ساتھ پیرامیڈیکل سٹاف، نرسز، ٹیکنین اور دیگر عملہ بھی بھرتی کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مغربی پنجاب سے ہزاروں کی تعداد میں گردہ مثانہ کے مریض لاہور میں علاج کے لیے آتے ہیں اگر بہاولپور میں ڈائلسز سینٹر بن جاتا ہے تو اس سے جنوبی پنجاب کے ہزاروں مریضوں کو علاج مجالجے کی سہولیات ملیں گی لاہور کے ہسپتالوں میں مریضوں کا رش کم ہو جائے گا۔
کڈنی سینٹر/بہاولپور