راستہ نہ دینے پر ڈی ایس پی کے بھتیجے کا شہری پر تشدد، پولیس نے زبردستی صلح کروا دی

لاہور (نامہ نگار) قلعہ گجر سنگھ کے علاقہ میں ڈی ایس پی سکیورٹی شجر عباس کے موٹر سائیکل سوار بھتیجے نے راستہ مانگنے پر ایک شہری کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد اس کی کار کے شیشے توڑ دئیے۔ متاثرہ شہری دادرسی کے لئے تھانے گیا تو ڈی ایس پی نے الٹا شہری کے خلاف اپنے بھتیجے کو اغوا کرنے کا مقدمہ درج کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے زبردستی ”صلع“ کرا دی۔ بتایا جاتا ہے کہ قلعہ گجر سنگھ کے علاقہ کوئین میری کالج کے قریب ایک شہری اپنی گاڑی پر جا رہا تھا کہ دو موٹر سائیکل سوار نوجوان اس کی گاڑی کے آگے موٹر سائیکل پر کرتب کرنے لگے۔ شہری نے ہارن دے کر راستہ لینے کی کوشش کی تو دونوں لڑکوں نے موٹر سائیکل آگے لا کر گاڑی روکی اور شہری کو گالیاں دینا شروع کر دیں اور اسے تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد مکے مار کر اس کی گاڑی کی فرنٹ سکرین اور بیک سکرین توڑ ڈالی اور موقع سے فرار ہو گئے۔ عینی شاہد انور کے مطابق دونوں لڑکوں نے شہری سے زیادتی کرتے ہوئے اسے تشدد کا نشانہ بنایا اور اس کو دھمکیاں دیتے ہوئے فرار ہو گئے۔ شہری زیادتی کی درخواست لے کر تھانہ قلعہ گجر سنگھ گیا تو پولیس نے ڈی ایس پی کے بھتیجے کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے الٹا متاثرہ شہری کو ہراساں کرتے ہوئے اس کے خلاف ڈی ایس پی کے بھتیجے کو اغوا کرنے کا مقدمہ درج کر کی ”نوید“ سنائی اور ڈرا دھمکا کر اس کی زبردستی ڈی ایس پی کے بھتیجے کے ساتھ صلح کرا دی۔
شہری پر تشدد