تعلیم، صحت کا بجٹ دگنا، سرکاری ملازمین کی تنخواہیں بڑھائی جائیں: میاں محمود الرشید

لاہور (سیف اللہ سپرا) قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ صوبہ پنجاب میں امن و امان کی حالت بہت خراب ہے۔ صحت اور تعلیم جیسے اہم محکموں کو پرائیویٹ سیکٹر کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے۔ مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے۔ جسے کوئی کنٹرول کرنے والا نہیں ہے۔ لوگوں کا جان و مال محفوظ نہیں پنجاب میں پانچ سال تک مسلم لیگ (ن) کی حکومت رہی مگر اس صوبے میں بہت سے مسائل ہیں لاکھوں لوگ بے روزگار ہیں۔ سکول جانے کی عمر کے 16.1 فیصد بچوں کو تعلیم کی سہولتیں میسر نہیں،مالی حالت خطرناک حد تک خراب ہے۔ حکومت اگر صوبے کی حالت بہتر بنانا چاہتی ہے تو اپنی شاہ خرچیاں ختم کرے۔ تعلیم اور صحت کا بجٹ دگنا کرے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کرے اور امرا پر ٹیکس عائد کرے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نمائندہ نوائے وقت کے ساتھ گفتگو میں کیا۔ قبل ازیں انہوں نے ایڈیٹر انچیف نوائے وقت گروپ جناب ڈاکٹر مجید نظامی سے ملاقات کی ۔ میاں محمود الرشید نے کہا کہ آج پنجاب میں بسنے والا ایک عام غریب گھرانے کا فرد انصاف، روزگار ، تعلیم اور صحت کی سہولت کا تصور بھی نہیں کر سکتا۔ بدقسمتی سے پچھلی ایک دہائی سے صحت اور تعلیم کے ادارے پرائیویٹ سیکٹر کے رحم و کرم پر چھوڑ دیئے گئے ہیں۔

مےاں محمودالرشےد