’’یمن اور سعودی عرب میں فوج نہ بھیجی جائے‘‘ اہلسنت جماعتوں کی اے پی سی میں مطالبہ

لاہور (خصوصی نامہ نگار)سنی اتحاد کونسل پاکستان کے زیراہتمام منعقدہ اہلسنّت جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس میں شریک 30 اہلسنّت جماعتوں نے یمن اور سعودی عرب میں پاکستانی فوج نہ بھیجنے کا مطالبہ اور پارلیمنٹ کی مشترکہ قرارداد کی حمایت کا اعلان کردیا۔ اے پی سی کے مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ یمن بحران پر وزیراعظم کا پالیسی بیان پارلیمنٹ کی قرارداد کے منافی ہے۔ حکومت کو پارلیمنٹ کے فیصلے سے ہٹنے نہیں دیں گے۔ یمن کی صورتحال پر اسلامی سربراہی کانفرنس بلائی جائے۔ سعودی حکومت اپنی سر زمین امریکی فوجیوں سے خالی کروائے۔17اپریل کو ’’ یوم اتحاد عالم اسلام ‘‘منایا جائے گا جبکہ 15اپریل کو سنی اتحاد کونسل کے سابق چیئرمین صاحبزادہ حاجی محمد فضل کریم کی دوسری برسی ملک بھر میں عقیدت و احترام کے ساتھ منائی جائے گی۔ سعودی عرب اور اس کے اتحادی پاکستانی پارلیمنٹ کی قرارداد کا احترام کریں۔ سنی اتحاد کونسل کے زیر اہتمام جامعہ رضویہ میں اہلسنّت جماعتوں کی اے پی سی کی صدارت چیئر مین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ محمد حامد رضا نے کی۔ اے پی سی میں سنی اتحاد کونسل ، مرکزی جمعیت علماء پاکستان ، جماعت اہلسنّت پاکستان، انجمن نوجوانان اسلام،تنظیم المساجد پاکستان ، پاکستان فلاح پارٹی ،مصطفائی تحریک ، منہاج القر آن علماء کونسل اور دیگر جماعتوں کے رہنمائوں نے شرکت کی۔ آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صاحبزادہ محمد حامد رضا نے کہا کہ پاکستان کو بیرونی دبائو کے بغیر آزادانہ فیصلے کرنے چاہئیں۔ یمن میں ہادی حکومت کی بحالی کی بات کرنے والے مصر میں مرثی کی حکومت کی بحالی کی بات کیوں نہیں کرتے۔امت مسلمہ قیادت کے بحران کا شکار ہے۔عالم اسلام کو آج بھٹو جیسے لیڈر کی ضرورت ہے۔ مفتی محمد اقبال چشتی نے کہا کہ افعانستان کی جنگ کا حصہ بننے کی وجہ سے ہمار ا ملک آج بھی دہشتگردی کی آگ میں جل رہاہے اس لئے ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھ کر یمن بحران پر جذباتی فیصلوں سے گریز کیا جائے۔ ارحم سلیم قادری نے کہا کہ پاکستانی فوج کو سعودی مفادات کی آگ کا ایندھن نہ بنایا جائے۔قاضی عتیق الرحمن نے کہا ہے کہ ہمارے حکمران سعودی ریالوں کے عوض ملکی سلامتی کو دائو پر نہ لگائیں ۔اے پی سی میں منظور کی گئی قر ار دادوں میں مطالبہ کیا گیا کہ او آئی سی سعودی عرب اور ایران کی باہمی کشیدگی کو ختم کروانے کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔ پُرامن اور محب وطن اہلسنّت کو فورتھ شیڈول سے نکالا جائے۔ اے پی سی کے اہم شرکاء میں صاحبزادہ عمار سعید سلیمانی، محمد اکرم رضو ی،مفتی محمد حسیب قادری، ملک بخش الٰہی اور دیگر شامل تھے۔