پنجاب بجٹ کا حجم 1259، ترقیاتی اخراجات 396 ارب متوقع، نئے ٹیکسوں کی سفارش

لاہور (احسن صدیق) وزارت خزانہ پنجاب کو آئندہ مالی سال 2015-16 کے صوبائی بجٹ کی تیاری کیلئے تمام صوبائی محکموں اور نیم حکومتی اداروں سے اخراجات جاریہ اور ترقیاتی اخراجات کے تخمینہ جات موصول ہو گئے ہیں۔ ابتدائی اندازوں کے مطابق پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ کا حجم 1259 ارب روپے کے لگ بھگ ہوگا جس میں اخراجات جاریہ کا حجم 862 ارب روپے اور ترقیاتی اخراجات کا حجم 396 ارب روپے کے لگ بھگ ہوگا تاہم صوبائی بجٹ کا حتمی حجم فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے آئندہ مالی سال کیلئے ٹیکس وصولی کے ہدف کے تعین کے بعد ہو گا۔ محکموں نے حکومت پنجاب کی بجٹ گائیڈ لائن کی روشنی میں غیرضروری اخراجات کو بجٹ تخمینہ جات میں شامل نہیں کیا ہے۔ ٹیکس اکٹھا کرنے والے صوبائی محکموں نے ٹیکس وصولی کے بارے میں تجاویز ارسال کر دیں ہیںجن میں ٹیکس کی شرح بڑھانے اور نئے ٹیکس عائد کرنے کی سفارشات شامل ہیں۔ ذرائع نے بتایا پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ کے لئے فیصلہ کیا ہے کہ سرکاری ملازمیں کی تنخواہوں اور پنشنرز کی پنشن میں اضافہ وفاقی حکومت کی جانب تنخواہوں اور پنشن میں کئے جانے والے اضافے کے تناسب کے مطابق کیا جائے گا۔