شارٹ فال 4500 میگا واٹ ہوگیا، بدترین لوڈشیڈنگ کیخلاف کئی شہروں میں مظاہرے

لاہور (نامہ نگاران+ نوائے وقت نیوز+ ایجنسیاں) لاہور سمیت ملک کے مختلف شہروں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بدستور جاری ہے جبکہ شارٹ فال 4500 میگاواٹ تک پہنچ گیا جس کے باعث لوڈشیڈنگ میں مزید اضافہ ہو گیا ہے جبکہ طویل اور بدترین لوڈشیڈنگ کیخلاف گزشتہ روز بھی کئی شہروں احتجاجی مظاہرے بھی کئے گئے جس کے دوران حکومت کیخلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ واضح رہے وزیراعظم نواز شریف نے شہروں میں لوڈشیڈنگ کو 6 گھنٹے تک محدود کرنے کی ہدایت جاری کی تھیں۔ گرمی کے دوران بجلی کی بندش سے لوگ بے حال ہو گئے اور کئی علاقوں میں بجلی بند ہونے پر رات کو مچھروں نے شہریوں کی نیند چھین لی۔ این ٹی ڈی سی ذرائع کے مطابق بجلی کی طلب 14 ہزار 100 اور پیداوار 9 ہزار 600 میگاواٹ ہے۔ جس سے بجلی کا شارٹ فال 4500 میگاواٹ تک ہو گیا ہے۔ شہری علاقوں میں 12 جبکہ دیہی علاقوں میں 18 گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جبکہ کئی شہروں میں پانی کی بھی قلت رہی۔ حکام کے مطابق بڑے ڈیموں سے پانی کا اخراج نہ بڑھائے جانے کے باعث پن بجلی کی پیداوار انتہائی کم ہے۔ تربیلا اور منگلا ڈیم سے بجلی پیداوار بڑھے گی بجلی کی مجموعی پیداوار میں بھی اضافہ ہوجائے گا۔ دریں اثناء ذرائع کا کہنا ہے کہ لوڈشیڈنگ میں 33 فیصد تک اضافہ ہو گیا جس کی وجہ مختلف پاور پلانٹس کی بندش ہے۔ دوسری جانب مظفر آباد میں موجود دو پاور پلانٹ پوائلر میں لیکیج کے باعث بند کرنا پڑے جن سے مزید 500 میگاواٹ بجلی کی فراہمی متاثر ہوئی۔ سرائے مغل سے نامہ نگار کے مطابق شہر اور گردونواح میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ سے عوام بلبلا اٹھے اور سراپا احتجاج بن گئے۔ ٹیوب ویل بند ہونے سے فصلیں تباہ ہو گئیں جبکہ گھروں میں بھی پانی نایاب ہو گیا۔ شرقپور شریف سے نامہ نگار کے مطابق غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں غیرمعمولی اضافہ ہو گیا، دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 18گھنٹے جبکہ شہری علاقوں میں 16گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے جس پر لوگ سراپا احتجاج بن گئے، لوڈشیڈنگ سے تنگ شہری سڑکوں پر نکل آئے اور حکومت کے خلاف حتجاج کیا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ حکومت لوڈشیڈنگ پر قابو پائے۔ منڈی فیض آباد سے نامہ نگار کے مطابق طویل لوڈشیڈنگ پر لوگ سراپا احتجاج بن گئے جبکہ بے جا لوڈشیڈنگ اور بار بار ٹرپنگ سے گھریلو صارفین کی الیکٹرونکس کی اشیا جل گئیں۔ علاوہ ازیں پاکپتن، نارووال، چنیوٹ ،ڈسکہ، ماموں کانجن اور دیگر شہروں میں بھی بدترین لوڈشیڈنگ پر لوگوں نے شدید احتجاج کیا ہے۔