بیٹے اور داماد پر پیسے بنانے کے الزامات‘ ثبوت عدالت میں پیش کریں: جسٹس رمدے

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ کے جج جسٹس خلیل الرحمان رمدے نے اٹارنی جنرل سے کہا ہے کہ وہ ان کے بیٹے اور داماد پر پیسے بنانے کے حوالے سے لگائے گئے الزامات کے ثبوت متعلقہ اداروں سے لے کر کھلی عدالت میں پیش کریں‘ این آر او نظرثانی اپیل کی سماعت کا آغاز ہوا تو جسٹس رمدے نے کہا کہ میں نے خود تو نہیں دیکھا مگر مجھے کسی نے بتایا ہے کہ ایک ٹی وی ٹاک شو میں آپ کے بیٹے مصطفٰی رمدے اور داماد پر بڑے پیمانے پر پیسے بنانے کا الزام لگایا گیا ہے جسٹس رمدے نے کہا کہ یہ ججوں کو بدنام کرنے کی سازش ہے‘ انہوں نے اٹارنی جنرل سے کہا کہ آپ حکومت پنجاب کو باقاعدہ لیٹر لکھیں اور اس سے ان پیسوں کے بارے میں مکمل تفصیلات اور ثبوت حاصل کریں جو بنائے گئے ہیں اور یہ ثبوت کھلی عدالت میں 17 رکنی بنچ کے سامنے پیش کریں تاکہ عوام کو بھی پتہ چل جائے‘ جسٹس رمدے نے کہا کہ میرے بیٹے کے سسر پی آئی اے میں اعلٰی عہدے پر تعینات تھے وہ چاہتے تو مصطفٰی رمدے کو قانونی مشیر بنا کر فائدہ پہنچا سکتے تھے تاہم اگر وہاں سے بھی کوئی فائدہ حاصل کیا گیا ہے تو اس کے ثبوت بھی کھلی عدالت میں پیش کئے جائیں۔
جسٹس رمدے