یوتھ فیسٹیول میں کرپشن کے ثبوت فراہم کرنے کیلئے وزیراعلی کو خط لکھوں گا: محمود الرشید

لاہور (سپیشل رپورٹر) پنجاب اسمبلی میں یوتھ فیسٹیول میں ہونے والی کرپشن پر اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے ثبوت فراہم کرنے کے لئے وزیر اعلی پنجاب کو لیٹر لکھنے کا اعلان کر دیا ہے۔  انہوں  نے کہا کہ لوگوں کو پیسے نہ ملنے پر انہوں نے ہم سے رابطہ کر نا شروع کر دیا ہے 2 لاکھ ٹوپیاں 300 روپے فی کس  اڑھائی لاکھ جھنڈی 15 روپے فی کس ، اور کرسیوں کا کرایہ کہیں 300 روپے فی کرسی جبکہ کسی جگہ 150 روپے فی کرسی وصول کیا گیا ہے ۔ کھانے پینے کے لنچ باکس بھی مہنگے داموں خریدے گئے ۔انہوں نے کہا کہ یوتھ فیسٹول کی آڑ میں کرپشن کی تحقیقات ہونی چاہیںکیونکہ ہر محکمہ کے چار فیصد ترقیاتی بجٹ کو کٹ کرکے یوتھ فیسٹول میں دیا گیا تھا جو کہ اربوں روپیہ بنتا ہے جس کا جواب سب کو دینا چاہیے حکومت گڈ گورننس کی بات کرتی ہے ثبوت کے ساتھ وزیر اعلی پنجاب کو ہونے والی کرپشن کے بارے میں خط لکھ رہا ہوں۔ اس پر وزیر قانون نے اس کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے ہمیشہ شفافیت اور میرٹ کی مثال پیدا کی ہے جب وزیر اعلی پر ایک ٹی وی چینل نے الزام لگایا تو اس کی تحقیقات کرکے خبر دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر وزیر اعلی کو خط لکھیں لیکن الزام برائے الزام کی روایت ختم ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے ہمیشہ مفاہمت کی سیاست کی ہے اسلئے کل وزیر اعظم پاکستان نواز شریف عمران خان کے گھر گئے تھے تاکہ ملک میں امن قائم ہو سکے ۔ جس پر اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ اگر حکومت نے یوتھ فیسٹول میں ہونے والی کرپشن پر پارلیمانی کمیٹی بنانی ہے تو اپوزیشن سے بھی نمائندگی لی جائے۔ میاں محمود الرشید نے کہا کہ پورا ملک دہشت گردی کی آگ میں جل رہا ہے اسلئے عمران خان نے بھی اس بات کا اعادہ کیا ہے کہ اس ایشو پر سیاسی پوائنٹ سکورنگ نہیں ہو گی بحالی امن کے اقدامات کا ساتھ دیں گے۔ اسی لئے اپوزیشن کہتی ہے کہ اضلاع میں جو ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ کمیٹیاں بنائی گئی ہیں ان میں اپوزیشن کے نمائندوں کو بھی شامل کیا جائے۔