پاکستان اور بھارت کے مابین برابری کی بنیاد پر تعلقات قائم ہونے چاہئیں: حمزہ شہباز

پاکستان اور بھارت کے مابین برابری کی بنیاد پر تعلقات قائم ہونے چاہئیں: حمزہ شہباز

لاہور (خصوصی رپورٹر) مسلم لیگ(ن) کے مرکزی رہنما و رکن قومی اسمبلی حمزہ شہبازشریف نے کہا ہے کہ محبت کی زبان کا اثر سرحد کے پار بھی جاتا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کی قیادت بھارت سے تعلقات کے حوالے سے آج بھی اپنے 1997ء کے موقف پر قائم ہے جب واجپائی دوستی بس پر لاہور آئے تھے اور مینار پاکستان کے سائے تلے دونوں ملکوں کے درمیان برابری کی بنیاد پر برادرانہ تعلقات کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار گذشتہ روز ماڈل ٹائون میں معروف بھارتی اداکار اوم پوری کے ہمراہ میڈیاکے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ حمزہ شہبازشریف نے کہاکہ وزیر اعظم نوازشریف ہمسایہ ملکوں سے خوشگوار اور دوستانہ تعلقات کی ٹھوس کمٹمنٹ پر عمل پیرا ہیں۔ آج کا دور اقوام کے درمیان روایتی جنگ و جدل کی بجائے معاشی مسابقت کا زمانہ ہے۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان تجارت اور ثقافتی وفود کے تبادلے اور کھیلوں کے مقابلو ں سے دونوں ملکوں کے عوام کو فائدہ پہنچے گا۔ پاکستان اور بھارت کی حکومتوں کے درمیان روایتی کشیدگی کو ختم کرکے اپنے اپنے عوام کا معیار زندگی بلند کرنے کی دوڑ شروع ہونی چاہئے۔ یہی مثبت مسابقت دونوں ملکوں کے عوام کی تقدیر بدلے گی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے بھارتی اداکار اوم پوری نے کہا کہ پاکستان اور بھارت میں ایسے لوگوں کی تعداد بہت کم ہے جو جھگڑے کا باعث ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں لاہور میں جو اپنائیت اور محبت ملی ہے اس سے ایسا لگتا ہے کہ پاکستان بھارت تعلقات خراب ہونے کی خبریں محض افواہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ دونوں ملکوں کے عوام ایک دوسرے سے قریبی تعلقات اور باہمی محبت کے رشتوں میں بندھے ہوئے ہیں۔ بھارتی وزیر اعظم واجپائی میں دوستی بس لے کر لاہور آئے تھے لیکن پیچھے سے کسی نے پٹاخہ چلا کر بہتر ہوتے ہوئے تعلقات کی گاڑی پٹری سے اتار دی تھی۔