سیاسی، معاشی، دہشتگردی سے بچنے کیلئے جھوٹوں، قاتلوں، نااہلوں کا صفایا ناگزیر: طاہر القادری

لاہور (خصوصی نامہ نگار) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ ایک نے قومی دوسرے نے دینی سالمیت پر حملہ کیا قومی سلامتی، نظریاتی اساس اور دیانت، امانت انہی کے ہاتھوں غیر محفوظ ہے جنہیں حفاظت کی ذمہ داری سونپی گئی تھی، پاکستان کو پٹڑی پر چڑھانے اور سیاسی، معاشی، نظریاتی دہشتگردی سے بچانے کیلئے جھوٹوں، قاتلوں اور نااہلوں کا صفایا ناگزیر ہے، اس صفائی میں جتنی تاخیر ہو گی ملک کا اتنا نقصان ہو گا۔ وہ گزشتہ روز عوامی تحریک کے مرکزی سیکرٹریٹ میں علماء مشائخ، یوتھ، ویمن لیگ، ایم ایس ایم اور پارٹی کے سنیئر رہنمائوں سے ملاقات کے دوران گفتگو کر رہے تھے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہاکہ حکومت پر مسلط ایک خائن گروہ عوام کے مذہبی ،دینی،قومی،سیاسی جذبات کو اپنے مخصوص اور مذموم مقاصد کیلئے مجروح کر رہاہے اور یہ چہرے پوری طرح بے نقاب بھی ہو چکے ہیں، قوم فیصلہ کن کارروائی کی منتظر ہے۔ سربراہ عوامی تحریک نے سینٹ آف پاکستان کی طرف سے منظور کی جانیوالی قرارداد پر کہا کہ ’’اب پچھتائے کیا ہوت جب چڑیاں چُگ گئیں کھیت‘‘۔ انہوں نے کہا کہ اس شق کے خاتمے کے دو ہی طریقے ہیں کہ جس طریقے سے ختم نبوت کے حلف نامہ میں تبدیلی کو حکومت نے واپس لینے کا اعلان کیا، اسی طرح شق 203 کو واپس لینے کا اعلان کر دے جس کا کوئی امکان نہیں ہے، دوسرا طریقہ سپریم کورٹ اسے کالعدم قرار دے دے۔ انہوں نے کہا کہ ختم نبوت کے حلف نامہ میں تبدیلی کے عمل پر اراکین کی طرف سے اجتماعی گناہ کا اعتراف کافی نہیں، حلف نامہ بدلنے والے کرداروں، ذمہ داروں اور سہولت کاروں کو قوم کے سامنے بے نقاب کیا جائے۔ یہ حادثہ نہیں سانحہ ہے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے فیصل ٹائون تھانہ میں آتشزدگی کے واقعہ پر کہا کہ اشرافیہ کے عہد اقتدار میں ریکارڈ جلتے نہیں جلائے جاتے ہیں، آگ لگتی نہیں لگائی جاتی ہے۔ دیکھتے ہیں نیب کے اس ریکارڈ روم میں آتشزدگی کا واقعہ کب پیش آتا ہے جہاں والیم 1سے لے کر والیم 10 رکھا گیا ہے۔