گھی، آئل مہنگا بیچنے پر 3 ملز سیل، مالکان سمیت 100 افراد گرفتار، تاجروں کا مظاہرہ

لاہور (نیوز رپورٹر) پنجاب حکومت کی طرف سے تمام برانڈز کے گھی اور خوردنی تیل کی قیمتوں میں 15روپے فی کلو کمی کے نوٹیفکیشن پر عملدرآمد نہ ہو سکا، حکم نامے پر عملدرآمد نہ کرنے پر گرفتاریوں اور بھاری جرمانے عائد کرنے کا سلسلہ شروع کر دیا گیا جسکے باعث کئی علاقوں میں دکانداروں نے فروخت بند کر دی ، پاکستان بناسپتی مینو فیکچررز ایسوسی ایشن نے پنجاب میں گھی اور خوردنی تیل کی سپلائی روکتے ہوئے پورے پاکستان سے نمائندوں کا ہنگامی اجلاس آج ( جمعہ) کو لاہور کے مقامی ہوٹل میں طلب کر لیا جسکے بعد سیکرٹری انڈسٹریز پنجاب سے مذاکرات کئے جائیں گے۔ پنجاب حکومت نے بدھ کے روز پرائس کنٹرول، منافع خوری و ذخیرہ اندوزی کی روک تھام کے ایکٹ مجریہ 1977کی شق 3کے تحت خوردنی تیل اور گھی کے تمام برانڈز کی قیمتوں میں 15روپے فی کلو کمی کا نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے اسکا فوری نفاذ کر دیا تھا تاہم صوبائی دارالحکومت سمیت صوبہ بھر میں اس نوٹیفکیشن پر عملدرآمد نہیں ہو سکا۔ دکانداروں کاکہنا ہے مہنگے داموں خریدے ہوئے گھی اور آئل کو کس طرح 15روپے کم کر کے فروخت کر سکتے ہیں۔ گھی اور خورنی تیل کے ڈسٹری بیوٹرز اور ڈیلرز سے رابطے کئے ہیں لیکن وہ اس نوٹیفکیشن کے مطابق قیمتیں طے کرنے کیلئے تیار نہیں اور ان کا کہنا ہے کہ پہلے سے موجود سٹاک کو کم قیمت پر فروخت کر سکتے ہیں اور نہ نئی قیمت کے حوالے سے دکانداروں کو فروخت کئے گئے گھی اور خوردنی تیل پر کوئی ریلیف دے سکتے ہیں۔ پرائس کنٹرول مجسٹریٹ نے گزشتہ روز شادمان میں وفاق کے زیر انتظام یوٹیلیٹی سٹور پر بھی چھاپہ مار کر وفاقی حکومت کی ریٹ لسٹ دکھانے کے باوجود پنجاب حکومت کے نوٹیفکیشن کے مطابق گھی اور خوردنی تیل فروخت نہ کرنے پر منیجر کو حراست میں لے کر تھانہ شادمان میں بند کرا دیا۔ دوسری طرف پاکستان بناسپتی مینو فیکچررز ایسوسی ایشن نے پنجاب میں سپلائی روکتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے اپنی مرضی کے مطابق ریٹ لسٹ جاری کر دی جسے کسی صورت تسلیم نہیں کرتے۔ ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل عمر اسلام نے کہا ہم گھی اور خوردنی تیل کی قلت پیدا کر کے عوام کو مسائل کا شکار نہیں کرنا چاہتے۔ ہم حکومت سے تمام معاملات مذاکرات سے حل کرنا چاہتے ہیں لیکن حکومت کی طرف سے گرفتاریاں اور جرمانے قابل مذمت ہیں۔ مزید برآں این این آئی کے مطابق ڈی سی او لاہور کیپٹن (ر) محمد عثمان نے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو شہر میں گھی اور کوکنگ آئل کی نئی قیمتوں پر عملدرآمد کروانے کے لئے الرٹ رہنے کی ہدایت کی ہے۔ ڈی سی او لاہور کی اس ہدایت کے بعد ٹائون ایڈمنسٹریٹرز اور پرائس کنٹرول مجسٹریٹس نے شہر بھر میں کارروائی کرتے ہوئے 752 مقامات پر چھاپے مارے۔ ٹائون ایڈمنسٹریٹرز نے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کی خود نگرانی کی اور خود بھی فیلڈ میں جاکر شہر کے بڑے بڑے سٹورز کو چیک کیا۔ گھی اور کوکنگ آئل کو نئی مقرر کردہ قیمتوں پر فروخت نہ کرنے پر 92 افراد کو گرفتار کروا دیا گیا جبکہ 2 لاکھ 78 ہزار 6 سو روپے کے جرمانے بھی عائد کئے گئے۔گوجرانوالہ کے نمائندہ خصوصی کے مطابق صوبائی حکومت کی ہدایت پر ضلعی انتظامیہ نے گھی اور کوکنگ آئل مہنگے داموں فروخت کرنیوالی ملز، ہول سیل ڈیلرز اور دکانداروں کیخلاف کریک ڈائون کیا، تین ملز سیل، ملز مالکان سمیت 8 افراد کو جیل بھجوا دیا گیا۔ انتظامیہ کی کارروائی کیخلاف تاجروں نے دکانیں بند کرکے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ چھاپہ مار ٹیموں نے ہول سیل ڈیلرز کیخلاف کارروائی کرتے ہوئے دو تاجروں ابوبکر، فاروق کو گھی اور کوکنگ آئل مہنگے داموں فروخت کرتے ہوئے پکڑ کر انہیں جرمانے کی ادائیگی کے بعد 10 روز کیلئے جیل بھجوا دیا۔ دوسری طرف گھی کے بڑے تاجروں نے انتظا میہ کی چھاپہ مار کاروائیوں کیخلاف دکانیں بند کرکے ڈی سی او آفس کے باہر جرمانوں اور گرفتاریوں کیخلاف احتجاج کیا۔ معلوم ہوا ہے کہ بعض دکانداروں نے ہڑتال کو جواز بناکر گھی اور کوکنگ آئل کی بلیک میں فروخت شروع کردی ہے۔