امریکی خوشنودی کے لئے جماعۃ الدعوۃ پر پابندی لگائی گئی‘ حمید گل سمیت کئی افراد کیخلاف بھی قرارداد آئیگی: اسلم بیگ

امریکی خوشنودی کے لئے جماعۃ الدعوۃ پر پابندی لگائی گئی‘ حمید گل سمیت کئی افراد کیخلاف بھی قرارداد آئیگی: اسلم بیگ

لاہور (انٹرویو سلمان غنی) مسلح افواج کے سابق سربراہ ممتاز دانشور جنرل مرزا اسلم بیگ نے کہا ہے کہ ممبئی بم دھماکے اور دہشت گردی کا عمل ایک منظم ڈرامہ ہے جس کا مقصد پاکستان کو کمزور بنا کر اسے ڈرا دھمکا کر یہاں بھارت کی علاقائی بالادستی قائم کرنا ہے جس کیلئے امریکہ نے اسے چار سال قبل اپنا سٹریٹجک پارٹنر بنایا اور اب امریکہ بھارت کو اشارہ کر رہا ہے کہ دیکھو ہم مار کر چلے جاتے ہیں اور وقتی احتجاج ہوتا ہے لہٰذا تم بھی یہی کام کرو اور آگے بڑھو لیکن بھارت کے اس اقدام کا نتیجہ کیا نکلے گا یہ وقت بتائے گا۔ پاکستان فوج نے نہیں قوم نے قربانیوں کی تاریخ رقم کر کے بنایا‘ قوم مر جائے گی بھارت کی بالادستی قبول نہیں کرے گی۔ بھارت کی علاقائی بالادستی کے خلاف ڈٹ جائے گی‘ سرنڈر نہیں کرے گی۔ سلامتی کونسل کی قرارداد کے تحت مذہبی تنظیموں پر پابندی امریکہ کا پرانا ایجنڈا اور پرانی خواہش تھی جس کے خلاف تو خود مشرف حکومت حصہ نہیں بنی تھی لیکن موجودہ منتخب حکومت اس کے سامنے لیٹ گئی۔ ہماری سلامتی کونسل میں دوست چین‘ انڈونیشیا‘ ملائشیا دیکھتے رہ گئے اور گھنٹوں میں عمل درآمد شروع ہو گیا اور اب مزید قراردادیں بھی آئیں گی جن میں اور افراد بھی شامل ہیں جن میں جنرل حمید گل کا نام بھی شامل ہے۔ جنرل مشرف نے سینکڑوں افراد امریکہ کے حوالے کر دیئے۔ جماعۃ الدعوۃ خالصتاً فلاحی تنظیم تھی اور اس نے کشمیر اور بلوچستان کے زلزلہ زدہ علاقوں میں خدمت کی تاریخ رقم کی اور امریکہ کی خوشنودی کیلئے انہیں بین کر دیا گیا اور اب جو مزید رکاوٹ بنیں گے ان سے بھی ایسا کرنے کا پروگرام ہے جو اہل سیاست کیلئے چیلنج اور 16 کروڑ عوام کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ وہ گزشتہ روز نوائے وقت سے خصوصی بات چیت کر رہے تھے۔ جنرل مرزا اسلم بیگ نے کہا کہ امریکی اقدامات اسی ڈیل کا تسلسل ہے جو جنرل مشرف سے ہوئی تھی اور اب منتخب حکومت اس پر کاربند ہے۔ ممبئی دھماکے ایک منظم پلاننگ کا حصہ ہے۔ امریکہ اور بھارت طے شدہ حکمت عملی پر کارفرما ہیں۔ بھارت دبائو ڈالتا جائے گا‘ ہم امریکہ کے کہنے پر اقدامات کرتے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جہاں تک جنگ کے امکانات کی بات ہے‘ جنگ سے امریکی مفادات پر زد پڑے گی۔ یہ سب کچھ بھارت نے علاقائی بالادستی کیلئے طے شدہ ایجنڈا کا عمل ہے۔ اس لئے افغانستان کو اڈا بنا کر بھارت کے حوالہ کیا گیا اور جنوبی ایشیا کا حصہ بنا دیا گیا لیکن ایک بات واضح کر دوں کہ پاکستان فوج نے نہیں قوم نے بنایا تھا‘ قربانیوں کی تاریخ رقم کی تھی لہٰذا قوم مر جائے گی بھارت کی بالادستی قبول نہیں کرے گی۔ ہندو بنیئے کی غلامی کا تصور ہی ہمارے لئے موت سے کم نہیں‘ قوم کے اندر تحریک نظر آ رہی ہے لیکن اب قوم کو اپنا کردار ادا کرنا ہے‘ قومی مفادات کا تحفظ کرنا ہے‘ بھارت جیسے دشمن کا مقابلہ کرنا ہے‘ ہندو ذہنیت کو بے نقاب کرنا‘ امریکی ایجنڈا سے ٹکرانا ہے۔