صحت کے شعبہ کو 102، تعلیم کیلئے 244ارب روپے فراہم کر دیے: مجتبیٰ شجاع

لاہور (خصوصی رپورٹر) پنجاب کے وزیر خزانہ ایکسائز و ٹیکسیشن میاں مجتبی شجاع الرحمن نے کہاہے کہ پنجاب حکومت نے   ملینیم ڈویلپمنٹ اہداف حاصل کرنے کے لئے صحت کے شعبہ کو 102ارب روپے اور تعلیم کے لیے 244ارب روپے فراہم کئے ہیں۔ بنیادی فوکس پرائمری ہیلتھ کیئر اور بیماریوں سے بچائو ہے۔ غیر سرکاری فلاحی تنظیم کے ممبران سے خطاب کرتے میاں مجتبی شجاع الرحمن نے کہا کہ سماجی خدمت کے لئے وقت اور سرمایہ وقف کرنے والے مخیرحضرات معاشرے کا اثاثہ ہیں اور حکومت نے     خطرناک و پیچیدہ بیماریوں کے علاج معالجہ کے لئے خصوصی اقدامات کرتے ہوئے ریکارڈ فنڈز فراہم کئے ہیں۔ بچوں کو بیماریوں سے محفوظ بنانے کے لئے صوبہ بھر کے بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگائے جاتے ہیں۔ حکومت اس پروگرام کے لئے خطیر رقم خرچ کر رہی ہے-انہوں نے بتایا کہ 4 پسماندہ اضلاع میں ہیلتھ انشورنس سکیم کے اجراء کے لئے 4ارب روپے اور کم وسیلہ افراد کو صحت کی معیاری سہولیات کی فراہمی کے لئے 7ارب 50 کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں۔ ادویات کے معیار کو پرکھنے کے لئے ملتان، راولپنڈی اور لاہور میں تین ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹریاں قائم کی جارہی ہے اس کے علاوہ فیصل آباد اور راولپنڈی میں دو فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریوں کا قیام بھی عمل میں لایا جا رہا ہے جس کے لئے حکومت نے 15کروڑ روپے فراہم کئے ہیں۔ شالیمار ٹائون میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کا جائزہ لینے کے لئے ٹاؤن انتظامیہ کے حکام سے گفتگو کرتے ہوئے مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا کہ گرانفروشوں‘ ذخیرہ اندوزوں اور ناجائز منافع خوروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر صوبہ میں محروم معیشت طبقات کو براہ راست سبسڈی فراہم کی جائے گی۔