طوفانی بارش میں لیسکو کے پرانے اور اوور لوڈ سسٹم کو بچانا معجزے سے کم نہیں: رائو ضمیرالدین

لاہور (ندیم بسراسے) ملکی تاریخ میں ہونے والی سب سے بڑی طوفانی بارش سے لیسکو کے پرانے اور اوورلوڈ سسٹم کو بچانا معجزے سے کم نہیں تقریباً  62 سو کروڑ روپے کے 124 گرڈسٹیشن کو بچانے کیلئے انجینئرز اور ملازمین نے 5 روز مسلسل جاگ کر کام کیا۔ چیف ایگزیکٹو لیسکو رائو ضمیرالدین نے ’’نوائے وقت‘‘ سے بات چیت میں بتایا 13 سو ملین روپے کے ترقیاتی کام کروانے ہیں۔ سسٹم میں 15 سو ٹرانسفارمرز مزید شامل کرینگے۔ دوسری جانب ’’نوائے وقت‘‘ کے سروے میں یہ بات سامنے آئی کہ لاہور میں ہونیوالی بارش نے لیسکو کے 80 فیصد سسٹم کو اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا۔ لیسکو ہیڈآفس میں چیف ایگزیکٹو آفیسر رائو ضمیرالدین، جنرل منیجر ٹیکنیکل عبدالرحمان، آپریشن ڈائریکٹر محبوب علی، چیف انجینئر میٹریل مینجمنٹ چودھری قیصر زمان، کسٹمر سروسز ڈائریکٹر خالد محمود ناصر سمیت دیگر افسران نے 5 روز مسلسل کوآرڈینیشن کی۔ چیف ایگزیکٹو لیسکو رائو ضمیر الدین نے کہا ہے کہ بجلی صارفین نے عمران خان کی سول نا فرمانی تحریک کی اپیل کا اثر نہیں لیا۔ اگست میںبجلی کے بلوں کی وصولیاں 99 فیصد تک رہیں، حالیہ بارشوں سے لیسکو کا 40 کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔ چند روز کے دوران صارفین کی 20 ہزار 91 شکایات موصول ہوئیں جس میں سے 90 فیصد دور کر دی گئی ہیں۔ وہ گذشتہ روز لیسکو ہیڈکوارٹرز میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ ان کے ہمراہ جی ایم ٹیکنیکل عبدالرحمن، آپریشن ڈائریکٹر محبوب علی، ڈائریکٹر ایڈمن، ایچ آر صغیر احمد، کسٹمر سروسز ڈائریکٹرخالد محمود ناصر، سیکرٹری لیسکو میاں افضل سمیت تمام سرکلز کے منیجرز آپریشنز اور سینئر انجینئرز موجود تھے۔ لیسکو چیف نے بتایا کہ لیسکو کا موجودہ نظام طوفانی بارشوں کا مقابلہ نہیں کر سکا جس کے نتیجے میں صارفین کو بے پناہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ لیسکو نے 630 ، 400 ، 200 ،100 اور 50 کے وی کے سینکڑوں ٹرانسفارمرز کی تبدیلی کے ساتھ 4 ہزار 190 سنگل فیز گھریلو میٹر اور ایک ہزار 82 میٹر بھی تبدیل کئے اور بارش سے جلنے یا خراب ہونیوالے میٹروں کی تبدیلی کیلئے صارفین سے تبدیلی میٹر کی فیس بھی وصول نہیں کی گئی۔ اوور بلنگ کے حوالے ان کا کہنا تھا کہ شکایات موجود ہیں۔