اسلام آباد میں دھرنے کو 28 روز ہوگئے، تحریک انصاف فنڈز کی کمی کی شکار

لاہور (جواد آر اعوان/ دی نیشن رپورٹ) پاکستان تحریک انصاف کا اسلام آبا دمیں 28 روز سے دھرنا جاری ہے اور اسے غیر معینہ مدت کیلئے جاری رکھنے کیلئے فنڈز کی کمی درپیش ہے۔ دی نیشن کے مطابق عمران خان بظاہر وزیراعظم کا استعفیٰ لئے بغیر دھرنا ختم کرنے پر آمادہ نہیں تاہم وہ اس معاملے پر پریشانی کا شکار ہیں۔ عمران خان کے سینئر معاونین نے دی نیشن کو بتایا کہ آزادی دھرنا دینے والے رہنمائوں کیلئے ہر گزرنے والا دن مشکل ہے۔ ان ذرائع کا کہنا ہے کہ فنڈز دینے والوں نے پارٹی چیئرمین کو اپنے بزنس سے مزید فنڈز دینے سے انکار کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق آزادی مارچ کیلئے اخراجات پنجاب، خیبر پی کے کے بڑے بزنس ٹائیکون اور پارٹی فنڈز سے پورے کئے جارہے تھے۔ اس میں بیرون ملک سے آنیوالی رقوم شامل ہیں۔ پارٹی اب فنڈ ریزنگ مہم شروع کرنے پر غور کررہی ہے، یہ مہم اسد عمر کی قیادت میں ہوگی اور پارٹی چیئرمین اسکی نگرانی کریں گے۔ اطلاعات کے مطابق اب تک اربوں روپے خرچ کئے جاچکے ہیں۔ انکے مطابق موجودہ صورتحال میں بیرون ملک پارٹی کے حامی بھی فنڈز میں کمی کررہے ہیں۔ ایک رہنما نے بتایا کہ اگر ڈیڑھ لاکھ افراد مارچ میں آجائے تو یہ دھرنا 72 گھنٹے میں ختم ہوجاتا تھا اور مزید فنڈز کی ضرورت نہ پڑتی۔ ہمیں توقع نہیں تھی کہ یہ دھرنا 3 روز سے زیادہ ہوگا۔ پی ٹی آئی کی کور کمیٹی کی رکن ڈاکٹر یاسمین راشد نے بتایا کہ عمران خان فائونڈیشن سیلاب متاثرین کیلئے سرگرم ہے مگر تفصیل نہیں بتائی۔