ہائیکورٹ: نیول وارکالج پر حملے کے مجرم کی اپیل خارج‘ تین بار عمر قید برقرار

لاہور(وقائع نگار خصوصی) لاہور ہائی کورٹ سپیشل بنچ نے نیول وار کالج پر حملے کے ملزم ندیم عباس کی اپیل خارج کرتے ہوئے انسداد دہشت گردی لاہور کی عدالت کی طرف سے دی گئی تین بار عمر قید اور سوا چھ لاکھ روپے جرمانے کی سزا کو برقرار رکھا۔ مجرم ندیم حسین کے وکیل نے دلائل دیئے کہ حملے میں معاونت کا الزام غلط ہے۔ پولیس نے ناجائز طور پر اسے حملے میں ملوث کیا۔ مجرم کا سیکشن 164کا بیان بھی خود پولیس نے قلمبند کیا اور ایس پی تفتیش کرتا رہا۔ لہٰذا فاضل عدالت اسے بری کرنے کا حکم دے۔ سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ انسداد دہشتگردی عدالت نے گواہوں اور ٹھوس شہادتوں کی بنیاد پر ندیم کو عمر قید کی سزا سنائی۔ مجرم سے خود کش جیکٹ اور بارودی مواد برآمد ہوا تھا اس لئے اپیل مسترد کی جائے۔ فریقین کے دلائل کے بعد فاضل عدالت نے مجرم کی اپیل خارج کر دی۔ یکم جنوری 2008 کو مال روڈ لاہور پر واقع نیول وار کالج پر خودکش حملہ کیا گیا جس میں3 اہلکار شہید اور 15 افراد زخمی ہوئے تھے۔ تحقیقاتی اداروں نے خود کش حملہ آور کوبارودی مواد، موٹر سائیکل فراہم کرنے والے ملزم ندیم عباس کو لاہور سے گرفتار کر لیا۔ اس پر لاہور کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے تین بار عمرقید اور سوا چھ لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی۔ ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل خرم خاں نے مقدمہ میں ریاست کی نمائندگی کی۔