وزیراعظم‘ سپیکر قومی اسمبلی کے حلقوں میں 4 سڑکوں کی تعمیر‘ ٹریفک پولیس رکاوٹ بن گئی

لاہور(خبرنگار) ٹریفک پولیس لاہور نے وزیراعظم نوازشریف اور سپیکر سردار ایاز صادق کے حلقوں میں چار اہم سڑکوں کی تعمیرومرمت کا کام روک دیا۔ چیف ٹریفک پولیس افسر نے شرط عائد کی ہے کہ ان سڑکوں کی تعمیر صرف رات کو گیارہ بجے کے بعد کی جاسکتی ہے جبکہ ضلعی حکومت لاہور کے افسروں کا کہنا ہے کہ را ت کے اندھیرے میں سڑک اکھاڑ کر معیاری تعمیر نہیں کی جاسکتی۔ ضلعی انتظامیہ گزشتہ 2 ہفتے سے ٹریفک پولیس کی منت سماجت تک کرچکی ہے مگر چیف ٹریفک افسر راضی نہیں ہورہے۔ تفصیلات کے مطابق شاہراہ قائداعظم پر الحمرا ہال سے ظفر علی روڈ تک تعمیر کیلئے 19 کروڑ 50 لاکھ روپے مختص ہوچکے ہیں اور رواں ہفتے ٹینڈر جاری ہوجائیں گے۔ سرکلر روڈ پر بھاٹی سے اڈا کرائون بس تک کیلئے 13 کروڑ روپے کا ٹھیکہ دیا جاچکا ہے۔ میکلوڈ روڈ پر شاہراہ قائداعظم سے لکشمی چوک تک 6کروڑ کا ٹھیکہ دیا جاچکا ہے، ظہور الٰہی روڈ پر گول چکر سے مین بلیوارڈ تک پونے تین کروڑ کا ٹھیکہ دیا گیا ہے۔ ضلعی حکومت کے افسروں کے مطابق ایل ڈی اے نے سڑک بنانی ہو تو کسی کی جرأت نہیں کہ رات کو تعمیر کا مشورہ دے۔ وہاں تو سڑکیں بند کرکے کام کیا جاتا ہے مگر یہاں وزیراعظم اور سپیکر قومی اسمبلی کے حلقوں میں سڑک کی تعمیر کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔