نیٹو سپلائی بندش قوم کا متفقہ فیصلہ ہے، حکمرانوں کو روگردانی مہنگی پڑیگی: منور حسن

لاہور(خصوصی نامہ نگار)  جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن نے امریکی وزیر دفاع چک ہیگل کی طرف سے نیٹو سپلائی روکے جانے پر امداد بند کر دینے کی دھمکیوں پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھکاری حکمرانوں نے قوم کی عزت و وقار کو ڈالروں کے عوض بیچ دیا ہے، نیٹو سپلائی روکنا پوری قوم کا متفقہ فیصلہ ہے جس سے روگردانی حکمرانوں کو بہت مہنگی پڑے گی۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ حکمران قومی غیرت اور حمیت کا ثبوت دیں اور امریکہ کے سامنے جھکنے اور گھٹنے ٹیکنے کی بجائے ڈرون حملوں پر کوئی دبائو قبول نہ کریں، انہوں نے کہا کہ پاکستان نے امریکی جنگ میں کود کر پچاس ہزار کے قریب انسانی جانوں اور100 بلین ڈالر کا نقصان اٹھایا لیکن امریکہ ہماری قربانیوں کا اعتراف کرنے کو تیار نہیں اور آئے روز امداد بند کرنے کی دھمکیاں دیتا ہے جبکہ حکمران امریکی اہلکاروں کے سامنے بھیگی بلی بن جاتے ہیں جس سے پوری قوم کا سر شرم سے جھک جاتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ امریکی امداد ہماری قومی خود مختاری کے لیے ایک ایسا پھندا ہے، جس سے اس وقت تک نجات ممکن نہیں، جب تک ہم امریکی امداد کے بجائے خود انحصاری کی پالیسی نہیں اپناتے، اس لیے حکمران اپنی عیش و عشرت کو چھوڑ کر سادگی اختیار کریں ۔ دریں اثناء  سید منور حسن نے کہا ہے کہ عالم کفر اسلام دشمنی اور مسلمانوں کے قتل عام سے اسلام کی روشنی کو دنیا میں پھیلنے سے روک نہیں سکتا ،اسلام دنیا میں امن و امان کے قیام اور تمام انسانوں کو محبت ،اخوت اور مساوات کا پیغام دیتا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سید مودودیؒ کے دیرینہ رفیق کار معروف محقق اور ریسرچ سکالر مولانا عبدالوکیل علوی کی ادارہ معارف اسلامی لاہور سے35سالہ دینی و فکری خدمات کے بعد سبکدوشی کے موقع پر الوداعی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب سے ڈائریکٹر ادارہ معارف اسلامی حافظ محمد ادریس اور محمد انور گوندل نے بھی خطاب کیا ۔