مادر ملت نے آمر کا ڈٹ کر مقابلہ کیا، ایوان کارکنان میں برسی پر تقریب

مادر ملت نے آمر کا ڈٹ کر مقابلہ کیا، ایوان کارکنان میں برسی پر تقریب

لاہور (خصوصی رپورٹر) مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ نے تحریک پاکستان میں حصہ لینے کیلئے برصغیر کی مسلمان خواتین کو بیدار اور متحرک کیا۔ آپ نے ہر مرحلے پر اپنے عظیم بھائی کا بھرپور ساتھ دیا۔ اگر مادرملتؒ کے افکارو تصورات پر عمل کیا جائے تو پاکستان کی تقدیر بدل سکتی ہے۔ آپ جمہوریت کی بہت بڑی علمبردار تھیں اور آپ نے جمہوریت کیلئے بڑی قربانیاں دیں۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے ایوانِ کارکنانِ تحریک پاکستان، شاہراہ قائداعظمؒ لاہور میں مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ کی47ویں برسی کے موقع پر منعقدہ محفل قرآن خوانی کے بعد شرکاء سے خطاب کے دوران کیا۔ محفل قرآن خوانی کا اہتمام نظریۂ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا۔ اس موقع پر نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد، تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے چیئرمین کرنل(ر) جمشید احمد ترین، مادرملتؒ کی معتمد ساتھی بیگم ثریا کے ایچ خورشید، بیگم بشریٰ رحمن، بیگم مہناز رفیع ، پروفیسرڈاکٹر ایم اے صوفی ، پروفیسرڈاکٹر پروین خان، صوبائی پارلیمانی سیکرٹری رانا محمد ارشد، مولانا محمد شفیع جوش، عزیز ظفرآزاد اور نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے سیکرٹری شاہد رشید سمیت کارکنان تحریک پاکستان‘ مختلف شعبہ ہائے حیات سے تعلق رکھنے والے خواتین و حضرات کے علاوہ نظریاتی سمر سکول کے طلبا وطالبات اور ان کے والدین نے بھرپور شرکت کی۔ پروگرام کے باقاعدہ آغاز پر نظریاتی سمر سکول کے طلبہ نے تلاوت کلام پاک اور نعت رسول مقبولؐ پیش کی۔ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ مادرملتؒ نے ایک آمر کا ڈٹ کر مقابلہ کیا، ایوب خان کیخلاف صدارتی انتخابات میں انہیں دھاندلی کے ذریعے ہروایا گیا جس کا ملک کو بہت نقصان ہوا۔ اگر وہ ان انتخابات میں کامیابی حاصل کر لیتیں تو آج ملک کے حالات بہت مختلف ہوتے۔ بیگم ثریا خورشید نے کہا کہ میں طویل عرصہ مادرِ ملتؒ کے ہمراہ رہی اور یہ میری زندگی کا سنہری دور تھا، ان کا سفید لباس اور ہنستا مسکراتا چہرہ آج بھی میرے سامنے ہے۔  میرے خیال میں اگر مادر ملتؒ نہ ہوتیں تو پاکستان کا قیام بہت مشکل ہو جاتا۔ ہمیں محترمہ فاطمہ جناحؒ کے فرمودات پر عمل کرنا چاہئے۔ بیگم بشریٰ رحمن نے کہا کہ مادرملت محترمہ فاطمہ جناحؒ نے تحریک پاکستان کے دوران قائداعظمؒ کا بھرپور ساتھ دیا۔آپ جمہوریت کی سب سے بڑی علمبردار اور علامت ہیں۔ بیگم مہناز رفیع نے کہا کہ نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کا ایک بڑا مقصد پاکستان کے ہر بچے اور بچی کو تحریک پاکستان، نظریۂ پاکستان، قیام پاکستان کے اسباب و مقاصد اور مشاہیر تحریک آزادی کے نظریات و تصورات سے آگاہ کرنا ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے کہا کہ تحریک پاکستان کے دوران مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ نے خواتین کو گھروں سے نکال کر آزادی کے لئے کام کرنے پر تیار کیا۔ ہمیں ان کے نقش قدم پر چلنے کی کوشش کرنی چاہئے۔ رانا محمد ارشد نے کہا کہ مادرملت محترمہ فاطمہ جناحؒ نے تحریک پاکستان میں جو بھرپور کردار ادا کیا اسے تاریخ میں سنہرے حروف سے لکھا جائے گا۔ نظریاتی سمرسکول کی ہونہار طالبہ تہذیب افضل نے مادرملتؒ کی حیات وخدمات کے حوالے سے خوبصورت تقریر کی جبکہ نظریاتی سمر سکول کے تین طلبہ نے قائداعظمؒ اور مادرملتؒ کا روپ دھارے پروگرام میں شرکت کی۔ پروگرام کے دوران مولانا محمد شفیع جوش نے مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ ، قائداعظمؒ اور دیگر مشاہیر تحریک آزادی کی بلندیٔ درجات‘ استحکام پاکستان کے لئے دعا کرائی۔