ئنگ ڈاکٹرز کے مطالبات کے حق میں لاہور سمیت کئی شہروں میں مظاہرے، سڑکیں بلاک

لاہور (نیوزرپورٹر) ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی جانب سے اپنے مطالبات کے حق میں صوبائی دارالحکومت سمیت کئی شہروں میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور سڑکوں پر احتجاج کیا گیا اور سڑکیں بلاک کردی گئیں۔ احتجاج کے باعث پنجاب بھر کے ہسپتالوں میں مریضوںکو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا اور سینکڑوں آپریشن ملتوی ہوگئے جبکہ دوسری جانب سے وائے ڈی اے کے احتجاج کے باعث شہر بھر میں ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا اور شہریوں کوبھی مسائل کا سامنا کرناپڑا۔ تفصیلات کے مطابق ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب کی جانب سے ایک دفعہ پھر گزشتہ روز حکومت کیخلاف احتجاجی مظاہرے اور دھرنے دیئے گئے جبکہ صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب بھر کے ہسپتالوں میں احتجاج جاری رہا۔ صوبائی درالحکومت کے ہسپتالوں میوہسپتال، گنگارام، سروسز، چلڈرن، جنرل، جناح ہسپتالوں اور ڈی مونٹ مورینسی کالج و ڈینٹل ہسپتال میں 10 بجے کے بعد ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے کام چھوڑ دیا گیا اور مال روڈ، جیل روڈ، فیروز پور روڈ اور کینال روڈ پر احتجاجی دھرنے دیئے گئے جس کی قیادت ڈاکٹرحامد بٹ، ڈاکٹر عامربندیشہ، ڈاکٹر تجمل بٹ، ڈاکٹر عثمان سمیت دیگر نے کی اور صوبائی دارالحکومت کے ہسپتالوں سے احتجاجی ریلیاں نکالیں اور صوبائی دارالحکومت کی مختلف سڑکوں پر دھرنے دیئے۔ اس موقع پر حکومت اور بیوروکریسی کیخلاف نعرے لگائے گئے۔ وائے ڈی اے کے رہنمائوں کا کہنا تھا کہ حکومت سمیت بیوروکریسی جان بوجھ کے ڈاکٹروں کو مسائل میں الجھارہی ہے اور وہ مسائل حل نہیں کرنا چاہتی۔انکا کہنا تھاکہ اگر حکومت نے انکے سروس سٹرکچر ، تنخواہوں میں اضافے اور پیڈ پی جی ٹرینیز کی نشستوں جیسے معاملات حل نہ کئے تواحتجاج کا دائرہ کار وسیع اور اسے جاری رکھا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ وہ آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان جلدہی کریں گے۔ دوسری جانب وائے ڈی اے کے احتجاج کے باعث مریضوںکو ہسپتالوں میں علاج معالجہ تعطل کا شکار ہوگیا اور سینکڑوں آپریشن نہ ہوسکے جبکہ اسکے ساتھ ساتھ ٹریفک بلاک ہونے کے باعث شہریوںکو بھی شدید مسائل کا سامناکرنا پڑا اور متعدد جگہوں پر ایمبولنسز بھی رش میں پھنسی رہیں اور مریض پریشان رہے جبکہ اس تمام صورتحال پر شہریوں کی جانب سے بھی احتجاج کیا گیا۔