پڑوسی کون

ظفر علی راجاؔ
آیا ہے جو پڑوس میں‘ وہ کون شخص ہے
اچھا ہے یا بُرا ہے‘ کوئی پوچھتا نہیں
سہمے ہوئے ہیں لوگ یہاں کس کے خوف سے
وہ کون سی بلا ہے‘ کوئی پوچھتا نہیں