لاہور: گلو بٹ 6 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نمبر 2 کے جج خالد محمود رانجھا نے سانحہ ماڈل ٹائون کے اہم کردار اور گاڑیوں کی توڑ پھوڑ میں ملوث پولیس ٹائوٹ گلو بٹ کو چھ روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔ گزشتہ روز گلو بٹ کو خصوصی عدالت میں سخت سکیورٹی میں پیش کیا گیا۔ فیصل ٹائون پولیس کی طرف سے ریکارڈ پیش کرتے ہوئے عدالت کو بتایا گیا کہ ملزم گلو بٹ سے اس معاملے پر تفتیش کرنی ہے کہ اس نے کس کے کہنے پر گاڑیوں کی توڑ پھوڑ کی، پولیس نے عدالت سے ملزم کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے گلو بٹ کو چھ روزہ جسمانی ریمانڈ پر  فیصل ٹائون پولیس کے حوالے کر دیا۔ دوسری طرف ماڈل ٹائون کے جوڈیشل مجسٹریٹ شہزاد مظفر نے گلو بٹ کی درخواست ضمانت پر فیصلہ محفوظ کیا تھا جس کی سماعت ہوئی جہاں پولیس کی جانب سے مقدمہ کا ریکارڈ پیش نہ کیا گیا۔ فاضل مجسٹریٹ نے حکم جاری کیا کہ ایک گھنٹہ میں فیصل ٹائون پولیس مقدمہ کا ریکارڈ پیش کرے تاکہ یہ علم ہو سکے کہ کیا ملزم گلو بٹ کے خلاف دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج ہے یا نہیں۔ عدالت ملزم کی ضمانت کی درخواست کا فیصلہ مقدمہ کا ریکارڈ چیک کرنے کے بعد ہی کرے گی۔ بعدازاں فاضل مجسٹریٹ کو بتایا گیا کہ ملزم کے خلاف دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا جس کے بعد فاضل مجسٹریٹ درخواست ضمانت کی سماعت نہیں کر سکتا جس پر عدالت نے ضمانت کی درخواست پر سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی۔