فوج نے آپریشن ضرب عضب شروع کر کے قوم پر احسان کیا: طاہر القادری

لاہور (نوائے وقت رپورٹ+خصوصی نامہ نگار+ نیوز ایجنسیاں) ڈاکٹر طاہر القادری نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوج کے افسروں اور جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوں نے پاک سرزمین کی حفاظت کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔ پاکستان کی سالمیت کی حفاظت کیلئے فوج نے آپریشن شروع کرکے 20 کروڑ عوام پر احسان کیا۔ فاٹا کے 95 فیصد سے زائد افراد پاکستان کے وفادار شہری اور پرامن ہیں۔ چند ہزار دہشت گرد ہیں جنہوں نے فاٹا، شمالی وزیرستان سمیت پاکستان کو یرغمال بنا رکھا تھا۔ آئی ڈی پیز کو تنہا نہیں چھوڑ سکتے، پاک سرزمین کا بچہ بچہ فوج، آئی ڈی پیز اور شمالی وزیرستان کے پرامن افراد کے ساتھ کھڑا ہوگا۔ آئی ڈی پیز کیلئے اشیاء خورونوش سے بھرے 14 ٹرک روانہ کردیئے ہیں۔ دہشت گردوں سے مذاکرات کی بات کرنا بہت بڑا فتنہ ہے۔  پاکستان دہشت گردی کے عذاب میں مبتلا ہے۔ شمالی وزیرستان کو دہشت گردوں نے اپنا ہیڈکوارٹر بنا رکھا تھا۔ دریں اثناء ڈاکٹر طاہر القادری سے تحریک انصاف کے رہنما ابرار الحق نے تین رکنی وفد کے ہمراہ ماڈل ٹائون میں ملاقات کی جس کے بعد ابرار الحق کی عوامی تحریک میں شمولیت کی خبریں گردش کرتی رہیں تاہم پی ٹی آئی کے رہنما کا کہنا تھاکہ تعزیت کیلئے ماڈل ٹائون آیا تھا شمولیت اختیار نہیں کی۔ ڈاکٹر طاہر القادری سے ملاقات میں ابرار الحق نے سانحہ ماڈل ٹائون پر اظہار افسوس کرنے کے علاوہ ملک کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ میں شہادت کاجذبہ لے کر انقلاب کی تحریک کا آغاز کر رہا ہوں ، اگر حکومتی خواہش پر فوج آئین کے آرٹیکل 245کے تحت امن و امان بر قرار رکھنے کیلئے آتی ہے اور دو تین ہزار شہادتیں ہوتی ہیں تو سینے پر تمغے سجا لیں انقلاب کا راستہ نہیں روکا جا سکتا ، انقلاب کے بعد سب سے پہلا کام احتساب ‘ پھر اداروں کی تشکیل نو اور آخری عمل انتخابات کا ہوگا ، تمام جماعتوں کو اپنی جدوجہد میں شرکت کی دعوت دی ہے کوئی جماعت کہاں تک ساتھ چلتی ہے یہ اسکی اپنی مرضی ہو گی لیکن ہم اپنے پر امن عوامی انقلاب کی تکمیل تک پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ علاوہ ازیں ڈاکٹر طاہر القادری سے سابق وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی نے ماڈل ٹائون میں ملاقات کی ۔ جس میں انقلاب مارچ کے مجوزہ اعلان سمیت ملک کی مجموعی صورتحال پرتفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔