شجاعت، پرویز الٰہی سے ملاقات، 14 اگست کو سونامی مارچ ضرور ہوگا: شاہ محمود

لاہور (خصوصی رپورٹر+ خصوصی نامہ نگار + نیوز ایجنسیاں) ق لیگ کے صدر چودھری شجاعت حسین اور سینئر مرکزی رہنما چودھری پرویزالٰہی سے تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی ہدایت پر وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے ملاقات کی اور پارٹی سربراہ کا پیغام بھی پہنچایا۔ شاہ محمود قریشی نے بعد ازاں مشترکہ پریس کانفرنس میں 2013ء کے انتخابات میں زبردست دھاندلی کا تفصیل سے ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں جماعتوں کی سوچ مشترک ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کا تبادلہ خیال کامیاب، مثبت اور حوصلہ افزا ہے، ق لیگ کی قیادت سے ذہنی مطابقت اور بہت سے نکات پر ہم آہنگی ہے، ہم آئینی حدود میں آگے بڑھیں گے۔ شاہ محمود نے  صدر ق لیگ کو افطار ڈنر کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کرلی۔ چودھری شجاعت حسین نے اس موقع پر کہا کہ ہم پر غیر آئینی چیزیں سامنے لانے اور جمہوریت ڈی ریل کرنے کا پراپیگنڈہ کرنے والے بتائیں کہ جمہوریت ہے کہاں؟ یہ جمہوریت ہے کہ 15 افراد کے قتل پر ایف آئی آر درج ہوئی اور اب تک نہ کوئی گرفتاری کی گئی جبکہ ایک قتل پر کتنے ہی لوگ پکڑے جاتے ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ شاہ محمود قریشی سے سانحہ ماڈل ٹائون، اے پی سی سمیت بہت سے امور پر بات چیت ہوئی۔ پرویز الٰہی نے کہا حکمرانوں کو چاہئے کہ وہ اپنا نام جمہوریت رکھ لیں اور ہر ضلع میں 15,15 بندے مار دیں، نہ ان کے خلاف کوئی ایف آئی آر درج ہو گی نہ کسی کی دادرسی کیونکہ جو بھی اس ظلم کے خلاف اٹھے گا اسے جمہوریت کو ڈی ریل کرنے والا کہا جائے گا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ق لیگ اور تحریک انصاف دونوں کی نظریاتی سوچ ایک ہے کہ کوئی غیر آئینی کام نہیں کرنا۔ تین نکات پر دونوں جماعتوں کی سوچ ایک جیسی ہے کہ 2013ء کے انتخابات میں دھاندلی ہوئی، الیکشن کمیشن اپنا مثبت رول ادا نہیں کر سکا اور اپنا حق حاصل کرنے کیلئے آئینی و قانونی طریقے سے احتجاج کیا جائے۔ 14 اگست کو لانگ مارچ ضرور ہوگا، سیاسی جماعتیں سول سوسائٹی اور عام شہری شرکت کریں گے۔ علاوہ ازیں چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ ہماری کوشش ہے کہ تمام جماعتیں ایک پیج پر ہوں اور اس سلسلہ میں پیشرفت ہورہی ہے، تمام سیاسی جماعتوں کو متحد ہوکر متفقہ لائحہ عمل اپنانا ہوگا ورنہ زبردستی وجود میں آنے والی دھاندلی حکومت کے دور میں ماڈل ٹائون جیسے سانحات ہوتے رہیں گے۔ وہ تحریک تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی سے بات چیت کے بارے میں پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری کو آگاہ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کررہے تھے۔ اس موقع پر ڈاکٹر طاہر القادری کے صاحبزادے حسن محی الدین قادری اور طارق بشیر چیمہ بھی موجود تھے۔