جیوتھرمل انرجی سے ایک لاکھ میگاواٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے: پاکستانی سائنسدان

جیوتھرمل انرجی سے ایک لاکھ میگاواٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے: پاکستانی سائنسدان

لاہور (ندیم بسرا) پاکستان میں سطح زمین کے نیچے بجلی پیدا کرنے والے وسیع وسائل موجود ہیں جن کو بروئے کار لا کر ایک لاکھ میگاواٹ بجلی جیو تھرمل انرجی (Geothermal Energy) سے پیدا کی جا سکتی ہے۔ ملک کے اندر بجلی کا بحران چار برسوں میں ختم کیا جا سکتا ہے۔  ایک خصوصی نشست میں معروف پاکستانی سائنس دان جاوید احمد نے بتایا کہ زمین کے نیچے 10 فٹ سے 300 فٹ تک جیو تھرمل کے وسیع ذخائر ہیں جہاں گرم پانی کے چشمے بہہ رہے ہیں۔ چشمے دراصل بجلی پیدا کرنے کا ایک قدرتی ذریعہ ہے۔ دنیا بھر میں جیو تھرمل کے 800 پلانٹس  رواں سال  دنیا کے مختلف ممالک میں لگنے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ امریکہ، جرمنی، چین، آسٹریلیا سمیت دیگر ترقی یافتہ ممالک میں جیو تھرمل انرجی پلانٹس لگ رہے ہیں۔ اگر حکومت میرے ساتھ تعاون کرے تو 4 برسوں کے اندر بجلی کا بحران ختم کر سکتا ہوں، صرف 4 سالوں میں 10 ہزار میگاواٹ بجلی جیو تھرمل پلانٹس سے پیدا کی جا سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس بننا بند ہو گئے ہیں، صرف چند ممالک دوستی کی آڑ میں پاکستانی حکمرانوں کو بیوقوف بنا رہے ہیں۔ جاپان، جرمنی نے اپنے نیوکلیئر پاور پلانٹس بند کر کے جیو تھرمل انرجی سے بجلی پیدا کرنا شرو ع کر دی ہے۔ جیو تھرمل انرجی سے 5 روپے سے 10 روپے تک فی یونٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے۔ باہر سے وسیع سرمایہ کاری 10  بلین ڈالر تک ملک میں لا سکتا ہوں۔ راولپنڈی، چکوال، ڈی جی خان، بہاولپور، وہاڑی میں ریسرچ کے دوران بات سامنے آئی ہے کہ جیو تھرمل انرجی کے وسیع ذخائر موجود پائے گئے۔ انہوں نے کہا کہ اب لاہور، فیصل آباد، شیخوپورہ، سرگودھا میں ریسرچ جاری ہے۔