جوڈیشل کمشن نہ بنا تو 30 دن میں تحریک انصاف کی احتجاجی مہم پھر شروع ہونیکا امکان

جوڈیشل کمشن نہ بنا تو 30 دن میں تحریک انصاف کی احتجاجی مہم پھر شروع ہونیکا امکان

لاہور( نیشن رپورٹ) 2013ء کے عام انتخابات میں دھاندلی کے الزامات پر جوڈیشل کمشن قائم نہ کئے جانے پر تحریک انصاف کی قیادت 30 دنوں کے اندر حکومت کیخلاف احتجاجی مہم شروع کرسکتی ہے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین کے قریبی ذرائع نے ’’دی نیشن‘‘ کو بتایا کہ چند کے علاوہ پارٹی کے تمام بڑے رہنمائوں نے جوڈیشل کمشن نہ بننے کی صورت میں 30 دنوں کے اندر حکومت مخالف ’’آزادی مہم‘‘ دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق پارٹی کی مرکزی اور صوبائی قیادت کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ پارٹی کی ہر سطح کے رہنمائوں کو دوبارہ تحریک شروع کرنے کیلئے تیار رہنے کا کہیں۔ پارٹی کے بعض پرانے کارکنوں کو دوبارہ شروع کی جانے والی مہم کی سرگرمیوں کو سپروائز کرنے کا ٹاسک بھی دیدیا گیا ہے۔ پرانے پارٹی رہنمائوں کو یہ ذمہ داری دینے کی وجہ یہ بتائی گئی ہے پچھلی مرتبہ دیگر جماعتوں سے آنیوالے رہنمائوں نے مہم کی سٹریٹجی سے حکومت کو آگاہ کردیا تھا جس کی وجہ سے بڑی تعداد میں لوگوں کو ڈی چوک تک لانے کے پروگرام پر عمل نہیں ہوسکا تھا تاہم بعض اعلیٰ رہنما دوبارہ احتجاجی تحریک شروع کرنے کی مخالفت بھی کررہے ہیں جن میں سے ایک رہنما جنوبی پنجاب اور دوسرے لاہور سے ہیں۔ ٹاسک دئیے جانے کے بعد مخصوص پارٹی رہنما مہم شروع کرنے کی نئی سٹریٹجی بنا کر عمران کے سامنے پیش کرینگے۔ رابطہ کرنے پر عارف علوی اور حامد خان نے احتجاجی تحریک دوبارہ شروع کرنے کی تیاریوں کی تصدیق کی تاہم اس حوالے سے کوئی ٹائم فریم دینے سے گریز کیا۔ انہوں نے کہا حکومت نہ تو دہشت گردی ختم کرنے کیلئے مخلصانہ کوشش کررہی ہے نہ ہی جمہوری اقدار کو یقینی بنانے کے حوالے سے اقدامات کررہی ہے۔