ایک تصویر ایک کہانی

للا ٹائون پنڈادا نخان جہلم کا 70 سالہ غریب حافظ محمد شریف پلے کارڈ اٹھائے لاہور پریس کلب کے باہر دادرسی کیلئے ارباب اختیار سے حسرت بھری نگاہوں سے مدد کیلئے امید لگائے بیٹھا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ نہایت غریب آدمی تین بیٹیوں کی شادی کیلئے کسی سے مانگی ہوئی ڈیڑھ لاکھ ادھار کی رقم بنک سے چند دن پہلے نکلوا کر گھر جارہا تھا کہ راستے میں ہی مسلح کار سوار اغوا کر کے پیسے چھین کر رسیوں سے باندھ کر جنگل میں چھوڑ گئے، جس کی متعلقہ تھانے میں ایف آئی آر بھی درج کروائی مگر میری کوئی امداد نہ ہوئی بلک الٹا مجھے تھانے سے دھکے دے کر نکال دیا گیا۔ مجاز افسران سے بھی کئی بار رابطہ کیا مگر میری غریبی کی وجہ سے میری کہیں بھی شنوائی نہیں ہورہی۔ سب میرے ساتھ ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں وزیراعلیٰ سے میری التجا ہے کہ میری مجبوری کے پیش نظر مجھ پر رحم کیا جائے اور ملزمان گرفتار کر کے میری رقم برآمد کی جائے تاکہ میں اپنے فرائض سے سرخرو ہوسکوں۔