حکومت شمالی وزیرستان میں آپریشن کے خاتمے کا ٹائم فریم دے: سراج الحق

   حکومت شمالی وزیرستان میں آپریشن کے خاتمے کا ٹائم فریم دے: سراج الحق

لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت شمالی وزیرستان میں آپریشن کے خاتمہ کا ٹائم فریم دے اور متاثرین کو اپنے گھروں میں جانے کی اجازت دی جائے۔ حکومت متاثرین کو فی خاندان 50 ہزار روپے امداد دے ۔ جن لوگوں کو آپریشن کی وجہ سے بے گھر ہونا پڑا ہے، وہ اپنے گھروں میں امن کی زندگی گزار رہے تھے۔ قبائلی علاقوں میں ناگاساکی اور ہیروشیما سے بھی زیادہ بارود گرایا گیا ہے، اسلام آباد میں بھی خطرناک لوگ موجود ہیں اگر ان کو ایک ہفتہ کے لئے اسلام آباد سے شمالی وزیرستان جانے پر مجبور کر دیا جائے تو انہیں آپریشن کی تلخیوں کا اندازہ ہو۔ صوبائی حکومت نے اپنے تمام وسائل متاثرین کی مدد کیلئے وقف کر دیئے ہیں۔ قبائل صرف پاکستان نہیں، امت کے ماتھے کا جھومر ہیں۔ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ جب تک ہمارے قبائلی بہن بھائی اپنے گھروں کو نہیں لوٹ جاتے، ہم بھی اپنے گھروں میں چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ ہم چاہتے ہیں کہ متاثرین عید اپنے گھروں میں گزاریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بنوں میں الخدمت فائونڈیشن کے کیمپ میں شمالی وزیرستان کے متاثرین میں امداد ی اشیاء کی تقسیم اور افطار ڈنر کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر میاں محمد اسلم، پروفیسر محمد ابراہیم خان، صاحبزادہ طارق اللہ، صاحبزادہ محمد یعقوب اور ڈاکٹر حفیظ الرحمن بھی موجود تھے۔ سراج الحق نے کہاکہ قبائلی عوام نے ہمیشہ پاکستان سے محبت اور وفاداری کا مظاہرہ کیا ہے، ان کے ساتھ یہ ظلم کیوں کیا جا رہا ہے؟ یہ وہ قبائل ہیں جنہوں نے کشمیر کی آزادی کے لئے اپنا لہو بہایا اور پاکستان کی سالمیت اور دفاع کے لیے اپنا سب کچھ قربان کرنے کے لئے تیار رہے مگر آج انہیں اپنے ہی ملک میں در بدر ٹھوکریں کھانے پر مجبور کر دیا گیا ہے۔ اس وقت ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت فوری طور پر آپریشن کا واضح ٹائم فریم دے تاکہ متاثرین اپنے گھروں کو لوٹ سکیں۔ علاوہ ازیں سراج الحق نے کہا ہے کہ اقتدار ملا تو دفاع کے بعد سب سے زیاد ہ بجٹ تعلیم کے لئے مختص کریں گے یکساں نظام تعلیم ملک بھر میں رائج کریں گے اور تعلیم کو مفت کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلامی جمعیت طلبہ کے مرکزی سیکرٹریٹ کے دورہ کے موقع پر  جمعیت کے کارکنوں اور مرکزی ذمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سراج الحق نے کہا کہ تعلیم ہر بچے کا بنیادی حق ہے، اس کو حق ملنے تک جدوجہد جاری رکھیں  گے۔ امیر خاندانوں اور جاگیرداروں کی اولادیں اعلیٰ تعلیمی اداروں میں زیرتعلیم ہیں مگر غریب افراد کو ٹاٹ سکول بھی میسر نہیں ہیں، ایک خاص طبقہ ملک کے اقتدار پر قابض ہے اور ملک کو جی بھر کر لوٹ رہا ہے۔ یکساں نظام تعلیم قومی یکجہتی اور ملی یگانگت کے لئے لازمی ہے۔ اقتدار میں آکر دفاع کے بعد سب سے زیادہ بجٹ تعلیم کا رکھیں گے۔ تعلیم کو امیروں کے محلات سے لے کر غریبوں کے جھونپڑوں سب تک لے جائیں گے۔ تعلیم کو مفت کر دیں گے۔
سراج الحق