غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری، گوجرانوالہ میں دورانیہ 14 گھنٹے سے بڑھ گیا

لاہور+ گوجرانوالہ + پشاور (نامہ نگاران+ نمائندہ خصوصی + آن لائن) بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ گذشتہ روز بھی جاری رہا جس کے باعث لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا رہا جبکہ کاروبار بھی شدید متاثر ہوئے۔ کئی علاقوں میں پانی کی بھی شدید قلت رہی ادھر سنٹرل جیل پشاور میں ہر گھنٹے بعد لوڈ شیڈنگ کے باعث کئی قیدی بے ہوش ہوگئے جبکہ متعدد کی حالت غیر ہوگئی۔ پشاور ہائی کورٹ کی جانب سے سنٹرل جیل کو لوڈ شیڈنگ سے مستثنیٰ قرار دینے کے باوجود لوڈ شیڈنگ جاری ہے۔ جیل ذرائع کے مطابق اس وقت سنٹرل جیل پشاور میں 2 ہزار 97 قیدی ہیں جبکہ جیل میں 487 قیدیوں کی گنجائش ہے۔ ٹوبہ ٹیک سنگھ سے نامہ نگار کے مطابق ہر ایک گھنٹے کے بعد 2گھنٹے لگاتار بجلی کی بندش معمول بن گئی۔ پاکپتن سے نامہ نگار کے مطابق شہر کو گیس کے پریشر میں کمی کرکے رات 8 بجے سے رات ساڑھے 10 بجے تک غیر اعلانیہ گیس کی لوڈشیڈنگ شروع کر دی گئی جس کے باعث کھانا پکانا دشوار ہو گیا اور لوگ سراپا احتجاج بن گئے۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گرمی میں اضافے کے ساتھ ہی گیپکو کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کادورانیہ بھی بڑھ گیا‘بجلی کی طویل بندش نے شہریوں کی زندگی وبال بنا کر رکھ دی۔ جب کہ گردونواح میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ14 گھنٹوں سے بھی تجاوز کرگیا‘ دیہی علاقوں میں مسسل تین تین گھنٹے کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے بعد صرف ایک گھنٹہ کے لئے بجلی آتی ہے جبکہ شہری علاقوں سیٹلائٹ ٹائون‘ وحدت کالونی‘ گرجاکھ‘ ماڈل ٹائون‘ پیپلز کالونی میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 12 گھنٹے تک پہنچ گیا ہے۔ غیر اعلانیہ بجلی کی بندش نے گھریلو صارفین کے علاوہ انڈسٹری اور کاروباری حضرات کو شدید تشویش کا شکار ہیں۔ شہریوں نے کہا ہے اگر یہی صورتحال رہی تو شہری سڑکوں پر آنے پر مجبور ہوں گے۔