ذوالفقار مرزا زرداری اختلافات، پی پی کیلئے مشکلات بڑھ گئیں

لاہور (سید شعیب الدین سے) آصف زرداری اور بلاول کے درمیان قضیہ طے نہیں ہوپایا تھا کہ ایک نئے فتنے نے جنم لے لیا ہے جس نے پیپلز پارٹی کی مشکلات بڑھا دی ہیں۔ بلاول اور زرداری کے اختلافات کسی لحاظ سے خاندانی ہیں مگر زرداری اور ان کے دیرینہ دوست ذوالفقار مرزا کی ہتھ جوڑی نے پارٹی قیادت کو سخت پریشانی سے دوچار کردیا ہے۔ ذوالفقار مرزا کے بعد ان کی اہلیہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا جو پارٹی کی مرکزی رہنما اور سابق سپیکر قومی اسمبلی ہیں، وہ بھی میدان جنگ میںکود پڑی ہیں۔ انہوں نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران جو جارحانہ لب و لہجہ اختیار کیا، اس پر سبھی حیران ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ مصلحتاً اب تک خاموش تھیں مگر بدین کے عوام کے ساتھ جو آمرانہ ہتھکنڈے استعمال کئے جارہے ہیں وہ شرمناک ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ 1997، 2002 کے عام انتخابات کے دوران بدین کے عوام نے پی پی پی کا ساتھ دے کر کامیابی دلائی اور آج انہی کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ پارٹی کے اندر قریبی دوست ذوالفقار مرزا کے ساتھ لفظی جنگ نہ صرف آصف زرداری کیلئے دردسر بنی ہوئی ہے بلکہ پارٹی کے ہر سطح کے قائدین بھی اس صورتحال سے پریشان ہیں۔ پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ ذاتیات کے حوالے سے جو باتیں کی گئیں، وہ نہیں کرنی چاہئیں تھیں مگر اس کے باوجود ذوالفقار مرزا کے خلاف ایکشن لیا گیا نہ مقدمہ درج کیا گیا مگر جب انہوں نے مسلح جتھے کوساتھ لے کر بازار بند کرایا اور تھانے پر حملہ کیا تو یہ  ممکن نہیں تھا کہ کوئی کارروائی نہ ہو۔ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا سینئر سیاستدان ہیںمگر بیوی بھی ہیں اس لئے خاموش نہ رہ سکیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دوستوں کا جانا نقصان دہ ہوتا ہے، یہ کہنا کہ کسی کے جانے سے نقصان نہیں ہوگا، غلط ہوگا۔ نقصان تھوڑا ہو یا زیادہ، بہرحال ہوتا ہے۔ پیپلز پارٹی سندھ کے سیکرٹری جنرل سینیٹر تاج حیدر نے کہا کہ قانون ساز اداروں کے ممبران کو قانون نہیں توڑنا چاہئے۔ قانون توڑنے میں نہیں، قانون کے سامنے سرنڈر کرنے میں فضیلت ہے۔ تاج حیدر نے کہا کہ بدین 50 سال سے ہمارا ہے اور اگلے 50 برس بھی ہمارا رہے گا۔ سندھ کے عوام باشعور ہیں، دیرینہ تعلقات کو توڑا نہیں جاتا، بگڑ بھی جائیں تو احترام ملحوظ خاطر رکھا جاتا ہے۔ بازار میں کھڑے ہوکر برا بھلا نہیں کہنا چاہئے۔پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب کے سیکرٹری اطلاعات شوکت بسرا نے کہا کہ پارٹی کی قیادت کے خلاف بات کرنے سے پہلے فہمیدہ مرزا کو پارٹی کی دی گئی سیٹیں واپس کردینی چاہئیں تھیں۔ یہ وہی مرزا خاندان ہے جو کہتا تھا کہ اللہ کے بعد سب زرداری کی دین ہے۔ پیپلز پارٹی سی ای سی کے ممبر اور سیکرٹری فنانس پنجاب اورنگزیب برکی نے کہا کہ ذوالفقار مرزا فرسٹریشن کا شکار ہیں، ان کی ہرزہ سرائی کا چونکہ کوئی جواب نہیں دے رہا، اس لئے وہ مزید فرسٹریشن کا شکار ہوکر ایسی حرکتیں کررہے ہیں۔ سابق صوبائی وزیر اشرف سوہنا نے کہا کہ ساری غلطی مسٹر ذوالفقار مرزا اور اب بیگم ذوالفقار مرزا کی ہے، جو کچھ کررہے ہیں مایوسی کی حالت میں کررہے ہیں۔ فہمیدہ مرزا کو چاہئے تھا سندھ حکومت سے شوہر کیلئے مہلت مانگتیں، شوہر کو سمجھاتیں۔