ایل ڈی اے پلازا آتشزدگی، ہائیکورٹ نے ڈی جی ریسکیو ڈاکٹر رضوان کو کام سے روک دیا

لاہور (وقائع نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے ایل ڈی اے پلازہ میں آتشزدگی سے ہلاکتوں کے ذمہ داروں کا تعین کرنے کیلئے دائر درخواست کی سماعت کے دوران ڈی جی ریسکیوڈاکٹررضوان نصیر کو بطور چیئرمین سیفٹی کمیشن کام سے روکدیا ۔ جمعہ کے روز لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس منصور علی شاہ نے کیس کی سماعت کی ۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ ڈی جی ریسکیو 1122ڈاکٹر رضوان نصیر چیئرمین سیفٹی کمیشن بھی ہیں لیکن ایل ڈی اے پلازہ میں آتشزدگی کو بجھانے ک لئے کوئی خاطر خواہ انتظامات نظر نہیں آئے۔ انہوں نے سماعت کے دوران ڈی سی او کی طرف سے وزیر اعلیٰ کو لکھے جانے والے خط سے بھی آگاہ کیا جس میں کہا گیا کہ ایل ڈی اے پلازہ میں آگ ایک سازش کے تحت لگائی گئی کیونکہ یہا ں اہم فائلیں موجود ہیں ۔ معزز عدالت نے ڈی جی ریسکیو 1122ڈاکٹر رضوان کو بطور چیئرمین سیفٹی کمیشن کام کرنے سے روکنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے نئے چیئرمین کے لئے تجاویز طلب کر لیں ۔ عدالت نے مزید سماعت 11جولائی تک ملتوی کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو انکوائری رپورٹ سمیت طلب کرلیا۔